پبلک وائی فائی استعمال کرنے والے صارفین کا ڈیٹا غیر محفوظ ہونے کا انکشاف

پبلک وائی فائی

اسلام آباد(شہزاد پراچہ) پبلک وائی فائی استعمال کرنے والے صارفین کا ڈیٹا غیر محفوظ ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔

سائبر سیکیورٹی پر کام کرنے والی ایک کمپنی کی تحقیق کے مطابق پبلک وائی فائی استعمال کرنے والے صارفین کا ڈیٹا غیر محفوظ ہے۔

آسٹریلیا نے سٹوڈنٹ ویزا فیس میں 100 فیصد سے زائد اضافہ کر دیا

عوامی مقامات پر چھٹیوں یا کاروباری دوروں کے دوران کیفے، ہوائی اڈوں، یا بیرون ملک وائی فائی کی سہولت کافی مقبول ہے۔ تا ہم ان غیر محدود نیٹ ورکس سے جڑتے وقت حفاظتی اقدامات سے آگاہ ہونا ضروری ہے۔

بعض اوقات، اسکیمرز جعلی وائی فائی نیٹ ورک بناتے ہیں یا موجودہ وائی فائی نیٹ ورک کو غیر قانونی طریقے سے کنٹرول کرتے ہیں اور پھر صارفین کے استعمال کے لیے ایسے نام استعمال کر سکتے ہیں جو اصلی نیٹ ورکس سے بہت ملتے جلتے ہیں۔

ایک بار کنیکٹ ہونے کے بعد، ذاتی معلومات جیسے کہ سوشل میڈیا لاگ ان، بینکنگ تفصیلات اور ای میل ایڈریس ہیکرز کے پاس جا سکتے ہیں۔

صرف درست اوورسیز ایمپلائمنٹ پروموٹرز سے رابطہ کریں ،بیورو آف امیگریشن اینڈ اوورسیز ایمپلائمنٹ

ان خدشات کے باوجود، ایسے موثر طریقے ہیں جن سے صارفین اپنی حفاظت کر سکتے ہیں اور اس بات کو یقینی بنا سکتے ہیں کہ ان کا ڈیٹا محفوظ رہے۔

ممکنہ خطرات سے بچنے کے لیے، کیسپرسکی ماہرین کی جانب سے پبلک وائی فائی نیٹ ورکس کے استعمال کے لیے محفوظ طریقوں کا ایک سیٹ تیار کیا گیا ہے۔

ماہرین کا ماننا ہے کہ پبلک وائی فائی نیٹ ورک صرف اس وقت استعمال کریں جب انتہائی ضروری ہو۔ عوامی وائی فائی کا استعمال کرتے وقت، متعلقہ عملے سے نیٹ ورک کے اصی ہونے کی تصدیق کرنے سے وائرس پر مبنی نیٹ ورکس کے کنکشن کو روکنے میں مدد مل سکتی ہے جو ذاتی معلومات حاصل کر سکتے ہیں۔

چیف جسٹس آئی پی پیز معاہدوں پر ازخود نوٹس لیں،اختر اقبال ڈار

اگر یہ سوشل نیٹ ورکس جیسے بیرونی پلیٹ فارمز کے ذریعے لاگ ان کی درخواست کرتا ہے، تو یہ ایک انتباہی علامت ہے۔ اس طرح کی کوشش کا مقصد ذاتی معلومات حاصل کرنا ہے۔

یہ مشق حساس ڈیٹا کو روکنے کے خطرے کو نمایاں طور پر کم کرتی ہے۔ عوامی وائی فائی پر رہتے ہوئے وی پی این کا استعمال کسی کی انٹرنیٹ پرائیویسی کو نمایاں طور پر بہتر بنا سکتا ہے۔

جدید وی پی این ڈیٹا کو انکرپٹ کرتے ہیں اور آن لائن سرگرمیوں کو غیر مجاز رسائی سے بچاتے ہیں۔ ماہرین کے مطابق وی پی این کو مسلسل استعمال کیا جا سکتا ہے۔

مون سون طوفانوں کی پیشگوئی ، سولر پلیٹوں کو نقصان پہنچنے کا خدشہ

مزید برآں، اعلیٰ معیار کی وی پی این سروسز انٹرنیٹ کی رفتار کم نہیں کرتی ہیں، جس سے صارفین اپنی براؤزنگ یا ڈاؤن لوڈ کی رفتار میں نمایاں کمی کا تجربہ کیے بغیر مکمل تحفظ سے انٹرنیٹ استعمال کر سکتے ہیں۔

” کیسپرسکی کے کنزیومر چینل کے سربراہ سیف اللہ جدیدی کا کہنا ہے کہ وی پی این روزمرہ کے استعمال کے لیے سائبرسیکیورٹی اقدام کے طور پر استعمال ہو سکتے ہیں۔

گندم کی فی من قیمت میں 800 روپے تک اضافہ ہوگیا

محفوظ، تیز تر اور قابل اعتماد شفاف روابط فراہم کرتے ہوئے اور پرائیویسی کی بڑھتی ہوئی سطحوں کے ساتھ، وی پی این ڈیجیٹل اسپیس میں موجودہ خطرات کے خلاف دفاع کو مضبوط کرتا ہے۔


متعلقہ خبریں