ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کا ہیلی کاپٹر حادثے کا شکار ہو کر لاپتہ

ایرانی صدر

ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کا ہیلی کاپٹر آذر بائیجان سے واپسی کے دوران حادثے کا شکار ہو کر لاپتہ ہو گیا۔

ہیلی کاپٹر خراب موسمی حالات میں دیزمر جنگل میں کریش ہوا، حادثہ ضلع اُوزی اور پیر داؤد قصبے کے درمیانی علاقے میں پیش آیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق ہیلی کاپٹر حادثے کی وجہ شدید دھند اور بارش کو قرار دیا گیا ہے۔ پرواز  کے آدھے گھنٹے بعد صدارتی ہیلی کاپٹر کا دیگر 2 ہیلی کاپٹروں سے رابطہ منقطع ہوا۔

ہیلی کاپٹر میں ایرانی صدر، وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان، مشرقی آذربائیجان صوبے کے گورنر ملک رحمتی، عالم دین حجۃ اللہ محمد علی الہاشم سمیت دیگر مقامی حکام بھی سوار تھے۔

ایران کے سرکاری ٹی وی کے مطابق یہ واقعہ ایرانی دارالحکومت تہران سے تقریبا 600 کلومیٹر شمال مغرب میں آذربائیجان کی سرحد پر واقع شہر جولفا کے قریب پیش آیا ۔

صدر ریئسی آذربائیجان میں ایک ڈیم کا افتتاح کرنے کے بعد واپس آ رہے تھے جب ان کی ہیلی کاپٹر کو اچانک حادثے کا شکار ہو گیا۔

علاوہ ازیں ایرانی سرکاری ٹی وی نے ہیلی کاپٹرکریش سے چند لمحے قبل کی ویڈیو جاری کر دی ہے،ویڈیو میں صدر رئیسی اور انکی ٹیم کو ایک ڈیم کے اوپر سے پرواز کرتے ہوئے دکھایا گیا،ویڈیو میں ایرانی وزیرخارجہ اور مشرقی آذربائیجان صوبے کے گورنر کو بھی دیکھا جا سکتا ہے۔

گزشتہ رات کئی گھنٹوں کی تلاش کے بعد بھی ہیلی کاپٹر کو تلاش نہیں کیا جا سکا تھا تاہم اب ایرانی میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ صدر ابراہیم رئیسی کے ہیلی کاپٹر کریش ہونے کے مقام پر ہیلی کاپٹر کا ملبہ مل گیا ہے۔  ریسکیو حکام کا ہیلی کاپٹر عملے سے رابطہ ہوا ہے۔

ایران کے نائب صدر کا اہم بیان

ادھر ایران کے نائب صدر اور ریسکیو آپریشن کے سربراہ محسن منصوری نے ایک انٹرویو دیتے ہوئے بتایا ہے کہ صدر کے ہمراہ دو مسافروں سے کئی بار رابطہ ہوچکا ہے اور بظاہر حادثے کی شدت کم تھی۔

ایران کے نائب صدر محسن منصوری انٹرویو دیتے ہوئے

محسن منصوری نے مزید بتایا کہ تین ہیلی کاپٹر اس وقت راستہ طے کر رہے تھے جب صدر مملکت کو لے جانے والے ہیلی کاپٹر کا رابطہ باقی دو ہیلی کاپٹروں سے منقطع ہو گیا۔ ان دو ہیلی کاپٹروں نے صدر کے ہیلی کاپٹر کو تلاش کرنے کی کوشش کی اور اس پرواز میں سوار ایک شخص اور پائلٹ سے رابطہ برقرار ہوا جس سے اندازہ ہو گیا کہ حادثے کی شدت زیادہ نہیں تھی۔

اس واقعے کے فورا بعد ہلال احمر امدادی کمیٹی، پولیس، فوج اور سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کو علاقے میں تعینات کرکے ہنگامی سرگرمیاں شروع کر دی گئیں۔

دوسری جانب ایرانی ہلال احمر نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ صدر ابراہیم رئیسی اور ان کے ساتھیوں کے ہیلی کاپٹر کی تلاش کی خبریں درست نہیں ہیں اور تباہ ہونے والے ہیلی کاپٹر کی تلاش کی کوششیں ابھی تک کامیاب نہیں ہوسکی ہیں۔

رہبر انقلاب اسلامی کی خصوصی دعا

دوسری جانب رہبر انقلاب اسلامی آيت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای نے صدر مملکت اور ان کے ہمراہ افراد کے صحت و سلامتی کے ساتھ لوٹنے کی دعا فرمائی ہے۔

رہبر انقلاب اسلامی آيت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای

رہبر انقلاب اسلامی نے سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کے سپاہیوں اور ان کے اہل خانہ سے ملاقات کے دوران اس تشویشناک حادثے پر اظہار پریشانی کرتے ہوئے فرمایا کہ اللہ تعالی سے دعا ہے کہ صدر محترم اور ان کے ہمراہ افراد صحیح اور سالم قوم کی آغوش میں واپس آئیں۔اس خدمت گزار گروہ کی سلامتی کے لئے سب دعا کریں۔

رہبر انقلاب اسلامی نے زور دیکر فرمایا کہ ایرانی عوام پریشان نہ ہوں اور یقین رکھیں کہ ملک کی سرگرمیوں میں کسی بھی قسم کا خلل واقع نہیں ہوگا اور حکومت کی تمام سرگرمیاں معمول کے مطابق جاری ہیں اور رہیں گی۔

دعا گوہیں : صدر ، وزیر اعظم پاکستان

دریں اثنا صدراوروزیراعظم نے نیک خواہشات کااظہارکرتے ہوئے کہا ہے کہ ایرانی صدرکی خیریت کیلئےدعاگوہیں،وزیراعظم شہبازشریف کا کہنا تھا ایرانی صدر کے ہیلی کاپٹر سےمتعلق خبر سنی ہے،دعاگو ہیں کہ ایرانی صدر خیریت سے ہوں گے۔

اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق کا کہنا تھا کہ دعا گو ہیں ایرانی صدر اور ان کے رفقا خیر وعافیت سے ہوں،ایرانی صدر سے ان کے حالیہ دورہ پاکستان میں انتہائی مفید ملاقات ہوئی تھی،مشکل اور امتحان کی گھڑی میں ایرانی بھائیوں اور بہنوں کے ساتھ کھڑے ہیں۔

حادثے کا شکار ہونے سے قبل ہیلی کاپٹر کی آخری تصویر

 

عالمی برادری کا ردعمل

امریکی صدرجوبائیڈن کوایرانی صدرکے ہیلی کاپٹرحادثے پربریفنگ دی گئی ،ترجمان امریکی محکمہ خارجہ کا کہنا ہے ہیلی کاپٹر حادثے سے متعلق خبروں پر ہماری نظر ہے۔

ترکی کے صدر طیب اردگان نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم X پر ایک پوسٹ میں کہا، میں اپنے پڑوسی، دوست اور بھائی ایرانی عوام اور حکومت کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کرتا ہوں، اور مجھے امید ہے کہ مسٹر رئیسی اور ان کے وفد سے جلد از جلد اچھی خبریں موصول ہوں گی۔

متحدہ عرب امارات کی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا کہ متحدہ عرب امارات تلاش اور بچاؤ کے کاموں میں ہر ممکن تعاون کی پیشکش کے لیے تیار ہے۔

سعودی عرب نے بھی ایران سے ہرقسم کے تعاون کے عزم کااظہار کیا ہے ،سعودی وزیرخارجہ کا کہنا تھاایرانی صدرکے ہیلی کاپٹرحادثہ کےبعدلاپتا ہونے پرگہری تشویش ہے،ہماری دعائیں ایرانی صدراوران کے ساتھیوں کے ساتھ ہیں۔

سعودی عرب مشکل حالات میں ایران کے ساتھ کھڑا ہے،ایرانی ریسکیوسروسزکوہرممکن مدد دینے کے لیے تیارہیں۔ہیلی کاپٹر حادثے پراقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے اظہارتشویش کیا ہے۔

علاوہ ازیں ترکیے کی ٹیم امدادی کارروائیوں کیلئے پہنچ گئی،ریسکیوٹیم میں نائٹ ویژن ہیلی کاپٹرزاور32ماہرین شامل ہیں۔

 

 


متعلقہ خبریں