حج پرمٹ کے بغیر مکہ آنے والے ایک لاکھ 53 ہزار افراد کو مکہ سے نکال دیا گیا

سعودی وزارت حج hajj

سعودی حکام نے حج پرمٹ کے بغیر مکہ آنے والے ایک لاکھ 53 ہزار افراد کو واپس بھجوا دیا۔

مکہ میں حج سکیورٹی فورسز کے کمانڈرز کی جانب سے حج کے دوران سکیورٹی کے انتظامات سے متعلق بریفنگ دی گئی۔

میڈیارپورٹس کے مطابق بریفنگ وزارت داخلہ کے مرکزی دفتر میں دی گئی،پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے حج سکیورٹی فورسز کے کمانڈرز کا کہنا تھا کہ ہمارا اولین مقصد حاجیوں کی حفاظت اور سلامتی کو یقینی بنانا ہے۔

بغیر اجازت نامے کے حج کرنا جائزنہیں، مفتی اعظم سعودی عرب

حج پرمٹ کے بغیر افراد کو مقدس مقامات میں داخل ہونے سے روکنا اور مکہ کے داخلی راستوں پر سکیورٹی حصار نافذ کرنا ہے تاکہ غیر مجاز داخلے کو روکا جا سکے۔

ان کا کہنا تھا کہ حج اور حاجیوں کی سکیورٹی ایک ”ریڈ لائن“ ہے، قوانین کی خلاف ورزی کرنے والی 97,000 سے زیادہ گاڑیوں کو واپس بھیج دیا گیا۔

اس کے علاوہ وزٹ ویزا رکھنے والوں میں سے حج قوانین کی خلاف ورزیوں پر 153,000 سے زیادہ افراد کو واپس بھیج دیا گیا ہے۔مزید کہا گیا کہ حاجیوں کی خدمت کے لیے سکیورٹی اہلکاروں کوفوری کارروائی کے لیے تمام انسانی اور مادی وسائل فراہم کیے گئے ہیں۔

اس موقع پر سعودی حکام نے وضاحت کی کہ وزٹ ویزا حج کی اجازت نہیں دیتا، حج پرمٹ حاصل کرنا ضروری ہے، سعودی قیادت کی مدد سے جلد اب اسمارٹ حج ہوگا۔


ٹیگز :
متعلقہ خبریں