بیرونی ادائیگیاں بروقت ، حکومت اسٹیٹ بنک سے قرض نہیں لے گی ، آئی ایم ایف کیساتھ مذاکرات میں اتفاق

آئی ایم ایف (IMF)

 وزارت خزانہ اور آئی ایم ایف نے آئندہ وفاقی بجٹ کیلئے اہم اہداف طے کر لیے۔

آئی ایم ایف مشن اور پاکستانی حکام کے درمیان وزارت خزانہ میں تعارفی سیشن ہوا جس میں پاکستان کی طرف سے وزیرخزانہ، سیکرٹری خزانہ،  چیئرمین ایف بی آر  اورگورنراسٹیٹ بینک موجود تھے۔

آئی ایم ایف کا نیا قرض پروگرام ، پنشنرز پر 10 فیصد ٹیکس لگانے کی تجویز

وزیرخزانہ محمد اورنگزیب نے آئی ایم ایف مشن کو موجودہ معاشی صورتحال پر بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ آئی ایم ایف کے ساتھ قرض معاہدے سے ملکی معیشت میں بہتری آئی۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان آئی ایم ایف کے ساتھ نیا قرض پروگرام سائن کرنے کیلئے تیار ہے، آئی ایم ایف کے ساتھ قرض پروگرام میں رہ کر معیشت درست سمت گامزن ہے۔ آئی ایم ایف مشن نے ملکی معیشت کیلئے اٹھائے گئے اقدامات پر اطمینان کا اظہار کیا۔

پاکستان اور آئی ایم ایف کےدرمیان نئے قرض پروگرام پر مذاکرات کا شیڈول طےپاگیا

ذرائع کے مطابق مذاکرات میں طے پایا گیا کہ آئندہ مالی سال کے دوران حکومت اسٹیٹ بینک سے قرض نہیں لے گی۔ غریبوں کیلئے ٹارگٹڈ سبسڈی دینے پر بھی اتفاق کیا گیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزارت خزانہ اور آئی ایم ایف نے بیرونی ادائیگیاں بلا تاخیر اور بروقت ادا کرنے پر اتفاق کیا ہے، اس بات پر بھی اتفاق کیا گیا  کہ ایف بی آر ٹیکس ریفنڈ ادائیگیاں بروقت کرنے کا پابند ہو گا ، اس کے علاوہ زرمبادلہ ذخائربہتر بنانے اور ادائیگیوں کیلئے انٹرنیشنل مارکیٹ میں بانڈز جاری کیے جائیں گے، درآمدات پر پابندی نہیں ہو گی ، انٹرنیشنل ٹرانزیکشنز کیلئے بھی پابندی عائد نہیں کی جائے گی۔

6 سے 8 ارب ڈالر کا نیا قرض پروگرام ، آئی ایم ایف نے پاکستان کی درخواست منظور کر لی

ذرائع نے بتایا کہ اسٹیٹ بینک، وزارت خزانہ اور وزارت توانائی کی معلومات آئی ایم ایف کو بھیجی جائیں گی،  آئی ایم ایف،  ایف بی آر، شماریات بیورو اور مارکیٹ بیسڈایکسچینج ریٹ کی معلومات لے گا۔

 پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان مذاکرات تقریباً دو ہفتے تک جاری رہیں گے، پاکستان آئی ایم ایف سے 6 ارب ڈالر سے زائد کا بیل آؤٹ پیکج  حاصل کرنے کیلئے پر امید ہے۔

ذرائع کے مطابق نئے قرض پروگرام کیلئے پاکستان کی معاشی ٹیم نے تمام ورکنگ مکمل کر لی ہے، آئی ایم ایف سے ایکسٹنڈڈ فنڈ فیسیلٹی قرض پروگرام کیلئے ورکنگ پیپر تیار کیا گیا ہے۔

 

 

 

 

 

 

 

 


ٹیگز :
متعلقہ خبریں