’’کیا پشاور بس منصوبہ اس صدی میں مکمل ہوجائےگا؟ ’’

پشاور ہائیکورٹ

پشاور: پشاور ہائیکورٹ کے جسٹس محمد ابراہیم نے شہر میں جاری بس ریپڈ ٹرانزٹ  (بی آر ٹی) بارے انتہائی دلچسپ سوال اٹھایاہے، فاضل جج نےاستفسار کیا کہ ’’کیا یہ منصوبہ اس صدی میں مکمل ہوجائیگا؟ ‘‘

پشاور ہائی کورٹ میں جسٹس محمد ابراہیم نے یہ سوال بی آر ٹی منصوبے میں نقائص کی نشاندہی سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران اٹھایا۔

جسٹس محمد ابراہیم نےدوران سماعت ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل  خیر پختونخوا سے استفسار کیا کہ ’’کیا یہ منصوبہ اس صدی میں مکمل ہوجائے گا؟

ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل نے جواب دیا کہ منصوبے پر کام جاری ہے جلد مکمل ہوجائے گا۔

یہ جواب سن کر جسٹس محمد ابراہیم نے تبصرہ کیا کہ کہ پتہ نہیں اس منصوبے کو مکمل ہونے کے بعد ہم دیکھ پائیں گے یا نہیں۔

اس پر ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل نے کہا انشااللہ آپ بی آر ٹی میں جلد سفر بھی کرلیں گے۔

یہ بھی پڑھیے: پشاور:بی آر ٹی منصوبے کے 69ملازمین فارغ ، لاگت 71ارب تک جاپہنچی

درخواست گزارشہری  نے عدالت کو بتایا کہ حکومت نے منصوبے کے روٹ میں پیدل چلنے والوں کے لیے راستہ تک نہیں چھوڑا۔

عدالت نے شہری کی درخواست پر صوبائی حکومت سے جواب طلب کرلیا۔

کیس کی مزید سماعت  16 اکتوبر تک ملتوی کردی گئی ۔


متعلقہ خبریں