سپریم کورٹ: رپورٹ جمع نہ کرانے پر ایئر بلیو کو جرمانہ


اسلام آباد: ایئربلیو طیارہ حادثہ کیس کی سماعت کے دوران رپورٹ جمع  نہ کرانے پر سپریم کورٹ  نے ایئر بلیو انتظامیہ پر 50 ہزا ر روپے  جرمانہ عائد کرتے  ہوئے رقم فاطمید  فاؤنڈیشن میں جمع کرانے کا حکم  دیا ہے۔

چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے کیس کی سماعت کے دوران کہا کہ عدالت نے معاوضے کی رقم  رجسٹرار کے پاس جمع کرانے کا حکم دیا تھا لیکن ایئربلیو انتظامیہ نے رقم کے بجائے چیک جمع کرا دیا، ایئربلیو انتظامیہ نے رقم اپنے پاس رکھ کر مارک اپ حاصل کیا  ہے۔

اس موقع پر ایئربلیو کے وکیل نے کہا کہ حادثے کے تمام متاثرین کو معاوضہ ادا کر دیا ہے، صرف چھ مسافروں کے ورثا ایسے ہیں جنہوں نے معاوضہ نہیں لیا اور سول عدالت میں چلے گئے ہیں، چیف جسٹس نے کہا کہ عدالت انہی چھ خاندانوں کی سماعت کر رہی ہے جنہوں نے معاوضہ نہیں لیا۔

انہوں نے کہا کہ حادثے کے متاثرین کا حق ہے کہ وہ معاوضہ لیں، ایئربلیو انتظامیہ کے جمع کرائے گئے چیک کو کیش کرایا جائے اور کسی نفع بخش اسکیم میں سرمایہ کاری کی جائے، سول عدالت تین ماہ میں معاوضے سے متعلق کیسز کا فیصلہ کرے۔

آج سپریم کورٹ میں بھوجا طیارہ حادثہ کیس متاثرین کو واجبات کی عدم ادائیگی کیس کی سماعت بھی ہوئی، سماعت کے دوران عدالت عظمیٰ نے تفتیشی افسروں کو چھ  ہفتوں میں چالان پیش کرنے کی ہدایت کی  اور حکم  دیا کہ ضمانت  پر رہا ہونے والے افراد کے مقدمات کا فیصلہ ایک ماہ میں کیا جائے۔


متعلقہ خبریں