روسی صدر کے بعد روسی آرمی چیف کے بھی وارنٹ گرفتاری جاری

آرمی چیف

انٹرنیشنل کرمنل کورٹ (آئی سی سی) نے روس کے آرمی چیف اور سابق وزیرِ دفاع کے وارنٹ گرفتاری جاری کر دیے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے الجزیرہ کے مطابق یوکرین میں شہری اہداف پر حملے اور جنگی جرائم کے الزام میں وارنٹ گرفتاری جاری کیے گئے۔

الجزیرہ کے مطابق ہیگ میں قائم عدالت نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ججوں کے خیال میں یہ ماننے کی بنیادیں موجود ہیں کہ روسی افواج نے جو 10 اکتوبر 2022 سے 9 مارچ 2023 تک یوکرین کے الیکٹرک انفرا اسٹرکچر کے خلاف میزائل حملے کیے، اس کے یہ افراد ذمہ دار تھے۔

سی پیک کے بعد پاکستان کا روس کے گیم چینجر منصوبے میں شمولیت کا فیصلہ

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ اس وقت کے دوران روسی افواج نے یوکرین میں متعدد مقامات پر سیکڑوں الیکٹرک پاور پلانٹس اور سب اسٹیشنوں پر بڑی تعداد میں حملے کیے۔

خیال رہے کہ گزشتہ سال عدالت نے روسی صدر ولادیمیر پیوٹن کے وارنٹ بھی جاری کیے تھے۔ روسی صدر پر یوکرین سے بچوں کے اغواء کی ذمہ داری کا الزام لگایا گیا تھا۔


متعلقہ خبریں