سپریم کورٹ، نیب ترامیم کالعدم قرار دینے کیخلاف آج حکومتی اپیلوں پر سماعت

Supreme Court

اسلام آباد: سپریم کورٹ پاکستان میں نیب ترامیم کالعدم قرار دینے کے خلاف حکومت کی اپیلوں پر سماعت آج ہو گی۔

چیف جسٹس سپریم کورٹ قاضی فائز عیسیٰ کی سربراہی میں 5 رکنی لارجر بینچ اپیلوں کی سماعت کرے گا۔ جسٹس امین الدین، جسٹس جمال مندوخیل، جسٹس اطہر من اللہ اور جسٹس حسن اظہر رضوی بینچ کا حصہ ہوں گے۔

سپریم کورٹ نے بانی پی ٹی آئی کو ویڈیو لنک کے ذریعے پیش کرنے کی ہدایت کر رکھی ہے۔

دوسری جانب سپریم کورٹ میں نیب ترامیم کیس کی سماعت کے معاملے پر بانی پی ٹی آئی عمران خان نے سپریم کورٹ میں ذاتی حیثیت میں پیش ہونے کے لیے بھی درخواست دائر کر رکھی ہے۔ سابق وزیر اعظم نے جیل انتظامیہ کے ذریعے تحریری درخواست چیف جسٹس کو بھجوائی۔

یہ بھی پڑھیں: سی پیک منصوبوں اور چینی ورکرز کی سیکیورٹی مزید سخت کرنے کا فیصلہ

واضح رہے کہ گزشتہ سال سابق چیف جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 4 رکنی بینچ نے نیب ترامیم کو بانی پی ٹی آئی کی درخواست پر کالعدم قرار دے کر سیاست دانوں کے 50 کروڑ سے کم مالیت کے کرپشن کیسز نیب کو منتقل کر دیئے تھے۔

فیصلے میں بے نامی کی تعریف، آمدن سے زائد اثاثوں اور بار ثبوت استغاثہ پر منتقل کرنے کی نیب ترامیم کالعدم قرار دی تھیں۔ عدالت عظمیٰ نے حکم دیا تھا کہ عوامی عہدوں پر بیٹھے تمام افراد کے مقدمات بحال کیے جاتے ہیں۔ فیصلے کیخلاف وفاق نے انٹرا کورٹ اپیلیں دائر کر رکھی ہیں۔


ٹیگز :
متعلقہ خبریں