صوبائی حکومت کا بجٹ خیالی پلاؤ کے علاوہ کچھ نہیں،اپوزیشن لیڈر خیبر پختونخوا


اپوزیشن لیڈر خیبر پختونخوا اسمبلی عباداللہ خان کا کہنا ہے صوبائی حکومت کا بجٹ خیالی پلاؤ کے علاوہ کچھ نہیں۔

انہوں نے کہا کہ موجودہ بجٹ کا 84 فیصد حصہ وفاق سے ملنا ہے،حکومت کو پتا بھی نہیں کس مد میں کتنا حصہ وفاق سے ملنا ہے،بیرون ملک یا وفاق سے پیسے ملنے ہیں یا نہیں یہ پتہ نہیں۔

سی سی پی نے 2 بروکریج ہاؤسز کے انضمام کی منظوری دیدی

اللہ کرے بجٹ میں جو محاصل لکھے گئے ہیں وہ ملیں،موجودہ بجٹ صرف مفروضات پر مشتمل ہے،تاریخ میں پہلی بار صوبے نے روایات توڑتے ہوئے وفاق سے پہلے بجٹ پیش کیا۔

انہوں نے مزید کہا موجودہ بجٹ پولیٹکل اسٹنٹ کے سوا کچھ نہیں ،یہ جاننا ضروری ہے اتنی جلدی بجٹ پیش کرنے کے پیچھے کیا محرکات ہیں،صوبے کے اپنے محاصل 93 ارب، وفاق کے محاصل 1200 ارب سے زائد ہیں۔

کسٹمز کے بنیادی فنکشنز کی بزنس پراسسنگ میپنگ مکمل

وفاق سے 1100 ارب دہشتگردی کیخلاف جنگ، لیویز اور دیگر شعبوں میں ملنا ہیں،وزیراعلیٰ کا انداز جارحانہ ہو تو کیسے امید کی جا سکتی ہے وفاق سے یہ تمام محاصل ملیں گے۔

موجودہ بجٹ میں اگلے مالی سال میں صوبے کے اخراجات 63 فیصد زیادہ ہیں،وزیر خزانہ بتائیں یہ کہاں سے ملیں گے؟


ٹیگز :
متعلقہ خبریں