حکومت کا کام بزنس کرنا نہیں، نجی سیکٹر کو ملک چلانا ہوگا، محمد اورنگزیب

محمد اورنگزیب

وفاقی وزیر خزانہ محمد اورنگزیب نے کہا ہے کہ حکومت کا کام بزنس کرنا نہیں ہے، نجی سیکٹر کو آگے اور وزراء کو پیچھے بیٹھنا چاہیے۔

اسلام آباد میں منعقدہ پاکستان سعودی عرب سرمایہ کاری فورم 2024 کی افتتاحی تقریب سے خطاب کے دوران وزیرخزانہ نے کہا کہ پاکستان اب عمل درآمد کی پالیسی پر عمل پیرا ہے، ہمیں اس مقصد کے لیے اپنے ٹیکس بیس کو وسیع کرنا پڑے گا۔

ن لیگ کے پاس اپنا وزیر خزانہ ہی نہیں تو آپ کا وجود ہی نہیں ہونا چاہئے، محمد زبیر

محمد اورنگزیب کا کہنا تھا کہ ہم 24ویں عالمی مالیاتی پروگرام (آئی ایم ایف) پروگرام میں جارہے ہیں۔ اس بات کو یقینی بنانے کے لیے کہ یہ ہمارا آخری پروگرام ہو، ہمارے پاس روڈ ٹو مارکیٹ کا ایک کلیئر ویو ہونا ضروری ہے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ اس میں سب سے پہلے ایکسپورٹ میں ترقی اور دوسرا براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری ضروری ہے اور اس میں آپ ہماری مدد کریں گے۔انٹرنیشنل کیپیٹل مارکیٹ تک رسائی بھی اس کے لیے انتہائی اہم ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں اپنی مشکل توانائی کے مسئلوں کو حل کرنا پڑے گا ، یہ ریفارم ایجنڈا کا دوسرا اہم حصہ ہے اور تیسرا سرکاری اداروں میں اصلاحات ہے۔ اگر ہم نےاس پر کام کرلیا تو ہمیں دوسرے فنڈ پروگرام میں جانے کی ضرورت نہیں پڑے گی۔

سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کا رواں ماہ پاکستان آنے کا امکان

وزیر خزانہ نے کہا کہ ہم نجکاری کا ایجنڈا تیزی سے مکمل کر لیں گے، اور مجھے امید ہے کہ جون کے آخر یا جولائی تک ہم اس کام کے آخری مرحلے میں ہوں گے۔ نجی سیکٹر کو اس ملک کو چلانا ہوگا، حکومت اس معاملے میں پُر عزم ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ملک میں زرِ مبادلہ کے ذخائر میں بتدریج اضافہ ہورہا ہے، ہم بیرونی سرمایہ کاری کے فروغ کے لیے کوشاں ہیں۔ 10 ماہ سے پاکستان کی کرنسی میں استحکام آیا۔

ہم سعودی عرب سے مدد کے بجائے ترقی کی بات کررہے ہیں،مصدق ملک

اس موقع پر وفاقی وزیر پیٹرولیم مصدق ملک کا کہنا تھا کہ پاکستان اور سعودی عرب کے درمیان برادرانہ تعلقات ہیں۔ ہمیں مل کر آگے بڑھنے کی ضرورت ہے، پاکستان کے پاس ہنر مند افرادی قوت کی کوئی کمی نہیں۔

مصدق ملک نے مزید کہا کہ پاکستان کے ہنر مند افراد سعودی عرب کی ترقی میں کردار ادا کررہے ہیں، سعودی عرب نے کم وقت میں تیزی سے ترقی کی۔ پاکستان میں معدنیات کے وسیع ذخائر موجود ہیں۔


متعلقہ خبریں