وزارت خزانہ نے پنشن رولز میں تبدیلیوں کیلئے سمری تیار کر لی

پنشن

پنشنرز کیلئے بڑی خبر آگئی


وزارت خزانہ نے پنشن رولز میں تبدیلیوں کیلئے سمری تیار کر لی، ذرائع کا کہنا ہے کہ وزارت خزانہ آئی ایم ایف سے مذاکرات سے قبل شرط کی منظوری چاہتی ہے۔

ذرائع کے مطابق پنشن رولز میں تبدیلی کا اطلاق وفاقی حکومت کے سول ملازمین پر کیا جائے گا، ترامیم پے اینڈ پنشن کمیشن کی 2020 کی سفارشات کی روشنی میں تیار کی گئیں۔

سمری میں سفارش کی گئی کہ مستقبل میں آخری تنخواہ کی بنیاد پر پنشن نہیں ملے گی، ذرائع کا کہنا ہے کہ سول محکموں میں ریٹائرمنٹ سے قبل ملازمین کو کئی ترقیاں دی جاتی ہیں۔

وفات کے بعد فیملی پنشن کی مدت 10 سال کرنے کی تجویز پیش

نئے طریقہ کار کے تحت پنشن کا تعین آخری 3 سال تنخواہ کی اوسط پر کیا جائے گا، سمری میں پنشنر کا کمیوٹیشن 25 فیصد کر دیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق پنشنر دوبارہ سرکاری نوکری کی صورت میں پنشن وصول کر سکتا ہے یا پھر تنخواہ،پنشن میں اضافہ صرف سالانہ مہنگائی کے ساتھ منسلک ہو گا۔

ذرائع کا کہنا تھا کہ اگر کسی سال مہنگائی 10 فیصد سے زائد ہوئی تو ایڈہاک ریلیف فراہم کیا جائے گا، جب مہنگائی کی شرح 10 فیصد سے کم ہو جائے گی پھر ایڈہاک ریلیف ختم کر دیا جائے گا۔


متعلقہ خبریں