سعودی عرب میں پاکستانی آم کے چرچے



پاکستان کے آموں کا دنیا میں کوئی مقابلہ نہیں اور اپنے ذائقے کی بدولت سب کے من پسند ہیں۔ سعودی عرب میں سجائے گئے مینگو فیسٹیول  میں شرکا پاکستانی آموں کے دیوانے ہو گئے۔

سعودی دارالحکومت ریاض میں سفارت خانہ پاکستان کے ٹریڈ مشن کی جانب سے مقامی مارکیٹ میں مینگو فیسٹیول سجایا گیا جس کا افتتاح پاکستانی سفیر راجہ علی اعجاز نے کیا۔

مینگو فیسٹیول میں پاکستانی آموں کی مختلف اقسام کو متعارف کروایا گیا۔ غیر ملکیوں نے بھی مینگو فیسٹیول میں شرکت کی اور پاکستانی آم  کی مختلف اقسام سے لطف اندوز ہوئے۔

پاکستانی سفیر راجہ علی اعجاز نے کہا کہ سعودی عرب ایک بڑی مارکیٹ ہے یہاں آموں کے علاوہ دیگر اشیاء اور مصنوعات کو فروغ دیا جاسکتا ہے۔

پاکستانی سفارت خانے کے منسٹر ٹریڈ اینڈ انوسٹمنٹ اظہر داہر نے کہا کہ ہماری یہ کوشش ہے کہ پاکستانی آم سعودی عرب کی تمام بڑی مارکیٹس میں دستیاب ہو جس کیلیے اقدامات کیے جا رہے ہیں۔

فیسٹیول میں شریک افراد کا کہنا ہے کہ آم کے علاوہ پاکستان کے دیگر پھلوں کو بھی دنیا بھر میں متعارف کرایا جائے۔

ریاض کی تمیمی سپرمارکیٹ میں منعقد کیے گئے مینگو فیسٹیول میں سعودی شہریوں کے لیے سندھڑی، چونسہ، انور رٹول اور لنگڑا آم کی اقسام رکھی گئی تھیں۔ فیسٹول میں آنے والے عام لوگوں کو بھی پاکستانی آم مفت چکھنے کی پیش کش کی گئی۔

پاکستان کے سفیرنے فیسٹیول میں شریک شخصیات اور شہریوں کو بتایا کہ پاکستان سعودی عرب کو آم برآمد کرنے والا دوسرا بڑا ملک ہے۔ انہوں نے کہا کہ وقت گزرنے کے ساتھ سعودی عرب میں پاکستانی آم کے ذائقے کو پذیرائی ملی ہے۔

پاکستان میں آم کا سیزن مئی میں شروع ہو کر اکتوبر کے اواخر تک رہتا ہے تاہم رواں سال کورونا کی وبا اور بین الاقوامی پروازوں کی معطلی کی وجہ سے پاکستان کے آم جون کے مہینے میں عرب ملکوں کی مارکیٹ تک پہنچے۔

ریاض میں ہونے والے اس مینگو فیسٹیول میں پاکستانی آم کی مختلف ورائٹی کو ملک شیک، آئس کریم اور کیک کی شکل میں رکھا گیا تھا جس میں شہریوں کی بڑی تعداد نے دلچسپی لی۔


متعلقہ خبریں