حکومت کا 2 ہزار سے زائد بھکاریوں کے پاسپورٹ بلاک کرنے کا فیصلہ

beggars

اسلام آباد: حکومت نے 2 ہزار سے زائد بھکاریوں کے پاسپورٹ بلاک کرنے کا فیصلہ کر لیا۔ بیرون ممالک بھیک مانگنے میں ملوث پاکستانی شہریوں کے پاسپورٹ 7 سال کے لیے بلاک کیے جائیں گے۔

ذرائع کے مطابق بیرون ممالک بھیک مانگنے کے لیے جانے والے پاکستانی ملک کی بدنامی کا باعث بن رہے ہیں۔ جن کی وجہ سے ان کے پاسپورٹ بلاک کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

ذرائع نے کہا ہے کہ لوگوں کو بھیک مانگنے کے لیے بیرون ممالک بھیجنے والے ایجنٹوں کے پاسپورٹ بھی بلاک کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ زیادہ تر بھکاری سعودی عرب، ایران اور عراق عمرے اور مزارات کی زیارت کے لیے جاتے ہیں۔

ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ بیرون ممالک بھیک کی غرض سے جانے والے افراد کا ڈیٹا اکٹھا کیا گیا ہے۔ اس حوالے سے وزارت داخلہ اور وزارت خارجہ کی جانب سے ایک مربوط پالیسی آخری مراحل میں ہے۔

یہ بھی پڑھیں: وزیر اعظم کا بجلی صارفین کے بلوں میں اضافی یونٹ بھیجنے کا نوٹس، ملوث افسروں، اہلکاروں کیخلاف کارروائی کا حکم

یاد رہے کہ گزشتہ سال ستمبر میں سمندر پار پاکستانیوں کی وزارت کی جانب سے سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے سمندر پار پاکستانیوں کے سامنے یہ انکشاف کیا گیا تھا کہ بھکاریوں کو بڑی تعداد میں غیرقانونی ذرائع سے بیرون ملک اسمگل کیا جاتا ہے۔

وزارت کے سیکرٹری نے سینیٹ پینل کے سامنے انکشاف کیا تھا کہ بیرون ملک پکڑے گئے بھکاریوں میں سے 90 فیصد کا تعلق پاکستان سے ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ عراقی اور سعودی سفیروں نے اطلاع دی ہے کہ ان گرفتاریوں کی وجہ سے جیلوں میں بہت زیادہ بھیڑ جمع ہو گئی ہے۔


ٹیگز :
متعلقہ خبریں