سندھ ہائیکورٹ نے عدالتی رپورٹنگ کی اجازت دے دی

sindh high cout سندھ ہائی کورٹ

سندھ ہائی کورٹ نے پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی (پیمرا) کی جانب سے جاری 21 مئی کے نوٹی فکیشن کی پابندی سے متعلق شقوں پر عمل روکتے ہوئے رپورٹرز کو عدالتی رپورٹنگ کی اجازت دے دی۔

دوران سماعت چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ نے ریمارکس دیے کہ یہ بھی حقیقت ہے کہ بعض ریمارکس نشر ہونے سے عدلیہ کا غلط تاثر چلا جاتا ہے، کورٹ رپورٹرز کو بھی عدالتی رپورٹنگ میں ذمہ داری کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔

ہیٹ ویو 15 سے 20 دن تک جاری رہنے کی پیش گوئی

سندھ ہائی کورٹ نے پیمرا، وزارت اطلاعات اور دیگر فریقین سے 6 جون تک جواب طلب کرلیا۔ عدالتی رپورٹنگ پر پیمرا کی پابندی کے اقدام کو سندھ ہائی کورٹ میں چیلنج کیا تھا جسے عدالت نے فوری طور پر سماعت کے لیے منظور کرلیا تھا۔

چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے سماعت کی، درخواست امین انور، شوکت کورائی اور دیگر کی جانب سے دائر کی گئی تھی، درخواست میں پیمرا،وزارت انفارمیشن براڈ کاسٹ و دیگر کو فریق بنایا گیا ہے۔

درخواست میں مقف اپنایا گیا کہ پیمرا نے عدالتی رپورٹنگ پر پابندی کا نوٹیفکیشن 21 مئی 2024 کو جاری کیا، پیمرا قواعد عدالتی لائیو رپورٹنگ کی اجازت دیتے ہیں، عدالتی رپورٹنگ پر پابندی عائد کرنے سے قبل اتھارٹی کی میٹنگ تک نہیں طلب کی گئی۔

لوڈشیڈنگ کا خاتمہ بجلی چوری روکنے سے ہی ممکن ہے، اویس لغاری

اس میں کہا گیا کہ پیمرا قوانین کے تحت پابندی سے قبل کورٹ رپورٹرز کا مقف نہیں سنا گیا ہے، کورٹ رپورٹنگ پر پابندی آئین کے آرٹیکل 8,9,10،18,19 اور 25 کی خلاف ورزی ہے۔


متعلقہ خبریں