خیبرپختونخوا، حالیہ بارشوں کے باعث حادثات میں جاں بحق افرادکی تعداد 59 ہوگئی

فلڈ rain

پی ڈی ایم اے نے خیبرپختونخوا میں بارشوں سےہونیوالے نقصانات کی رپورٹ جاری کر دی۔

صوبائی ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی( پی ڈی ایم اے ) نے صوبہ خیبر پختونخوا میں بارش سے ہونیوالے نقصانات کے حوالے سے ہفتہ وار رپورٹ جاری کی ہے جس کے مطابق جاں بحق افرادکی تعداد 59 ہوگئی ہے، جاں بحق افراد میں 33 بچے، 12 خواتین اور 14 مرد شامل ہیں۔

پہلی بیوی کی اجازت کے بغیر دوسری شادی پر شوہر مجرم قرار

پی ڈی ایم اے کے مطابق خیبرپختونخوا کے مختلف اضلاع میں حادثات کے باعث 72 افراد زخمی ہوئے ہیں ، بارشوں سے 436 گھر مکمل تباہ  ہوئے جبکہ 2 ہزار 447 کو جزوی نقصان پہنچا ہے ۔

رپورٹ کے مطابق چترال، دیر، باجوڑ،سوات اور دیگر علاقوں میں 309 مویشی ہلاک اور فصلوں کو نقصان پہنچا، اس کے علاوہ بارشوں اور سیلاب سے 26 سرکاری اسکولوں کو بھی جزوی طور پر نقصان پہنچا ہے۔

دوسری جانب  پی ڈی ایم اے بلوچستان نے کہا ہے کہ صوبے کے شمال مشرقی اور مغرب میں مغربی موسمی لہرکمزورپڑگئی ہے اور بارشیں بھی تھم گئی ہیں۔

پی ڈی ایم اے کے مطابق صوبے کے بیشترعلاقوں میں بارشیں تھم گئی ہیں مگر طوفانی بارشوں سے مواصلاتی رابطہ نظام شدید متاثرہوا ہے اور رابطہ سڑکوں کوبری طرح سے نقصان پہنچاہے۔

دوسرا ٹی 20: پاکستان کا نیوزی لینڈ کیخلاف ٹاس جیت کر فیلڈنگ کا فیصلہ

پی ڈی ایم اے حکام کا کہنا ہے کہ چمن ضلعی انتظامیہ متاثرہ علاقوں تک پہنچ رہی ہے اور متاثرہ علاقوں میں امدادی سرگرمیاں شروع کردی گئی ہیں۔ ڈپٹی کمشنر چمن کے مطابق ضلع کمپلیکس میں متاثرین کی مدد کیلئے ہیلپ سینٹر قائم کردیا گیا ہے۔انہوں نے درخواست کی کہ متاثرین ہیلپ سینٹر میں مالی وجانی اور علاقیکے نقصانات کی تفصیلات دیں۔

ڈی سی چمن نے مزید بتایا متاثرہ بالائی علاقوں میں پی ڈی ایم اے کی جانب سے خیمے، خوراک اور گھریلوسامان فراہم کیا گیا ہے مگر لینڈلائن، پی ٹی سی ایل، موبائل فون اور انٹرنیٹ سروسز اب بھی معطل ہے۔

ڈپٹی کمشنرکے مطابق کوژک ٹاپ کے مختلف مقامات پرلینڈ سلائیڈنگ کا ملبہ ہٹادیا گیا اور کوئٹہ چمن شاہراہ ہر قسم کی آمدورفت کیلئے کھول دی گئی ہے جب کہ پی ڈی ایم اے کی مشینری رابطہ سڑکوں کی بحالی کا کام جاری رکھے ہوئے ہیں۔


متعلقہ خبریں