پی این سی اے میں ‘آرٹس فار سوشل چینج’ کے موضوع پر پانچ روزہ ماسٹر کلاس کا انعقاد


‎پاکستان میں امریکی مشن کی حمایت کے ذریعے پاکستان یو ایس ایلومنائی نیٹ ورک (پی یو اے این) اور فاؤنڈیشن فار آرٹس کلچر اینڈ ایجوکیشن نے پاکستان نیشنل کونسل آف آرٹس اسلام آباد میں “آرٹس فار سوشل چینج” کے موضوع پر پانچ روزہ ماسٹر کلاس کا انعقاد کیا۔

تفصیلات کے مطابق 18 سے 22 ستمبر کو منعقد ہونے والی ریزیڈنسی نے پورے پاکستان سے 39 امریکی ایکسچینج سابق طلباء کو اکٹھا کیا۔ شرکاء میں بصری فنون، ادب، موسیقی، تھیٹر اور فلم سازی کے شعبوں سے تعلق رکھنے والے افراد شامل تھے اور پانچ ماہر اساتذہ بھی شامل تھے۔

‎اس موقع پر بیٹینا میلون، منسٹر کونسلر برائے پبلک افیئر پاکستان میں امریکی مشن نے کہا کہ ‘‎اپنے کام کے ذریعے آپ نے جانچا ہے کہ ہم کس طرح پسماندہ کمیونٹیز کے حقوق، قدرت اور ماحولیات کے تحفظ جیسے پیچیدہ مسائل کو حل کر سکتے ہیں۔ ہم کس طرح بین الثقافتی فنکارانہ اظہار کے ذریعے امن اور افہام و تفہیم پیدا کر سکتے ہیں۔’

محمد ایوب جمالی، ڈائریکٹر جنرل پاکستان نیشنل کونسل آف آرٹس کا خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ‘اس غیر معمولی اور غیر روایتی آرٹ ریذیڈنسی کا حصہ بننا واقعی ایک اعزاز کی بات ہے۔ جیسا کہ ہم نتیجہ اخذ کرتے ہیں، میں آپ کے علمی، پیشہ ورانہ اور ذاتی کاموں میں تنقیدی سوچ کی اس مشعل کو آگے بڑھانے کی اہمیت پر زور دینا چاہتا ہوں۔’

فیس فاؤنڈیشن کے سی ای او زیجاہ فضلی نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ‘‎میں اس تبدیلی کے اثرات پر غور کرتا ہوں جو اس اقدام نے ہمارے فنکاروں اور ان کمیونٹیز دونوں پر ڈالا ہے جن کی خدمت کرنے کا ہم ارادہ رکھتے ہیں۔ ماسٹر کلاس کے دوران، ہمارے سرشار فنکاروں نے مثبت تبدیلی کیلئے آرٹ کو ایک طاقتور آلے کے طور پر استعمال کرتے ہوئے اپنے آپ کو بامعنی تعاون میں کامیاب ثابت کیا۔

اس دوران فلم، تھیٹر، بصری فنون، ادب، مجسمہ سازی اور موسیقی کے شعبوں کے ماہرین نے عالمی چیلنجوں سے نمٹنے اور معاشرے میں نتیجہ خیز اور عملی تبدیلیاں لانے میں فنون لطیفہ کے اہم کردار پر روشنی ڈالی۔ ماسٹر کلاس میں اساتذہ اور ماہرین کی طرف سے انٹرایکٹو سیشنز اور انڈور اور آؤٹ ڈور عملی سرگرمیوں کے ساتھ لیکچرز اور بحث کو ملایا گیا۔


متعلقہ خبریں