پنکچر لگوانے کی جھنجھٹ نہ ہی ہوا بھرنے کی ضرورت ،گاڑیوں کے شوقین افراد کا بڑا مسئلہ حل

Cars

گاڑیوں کی خریداری بینک قرضوں سے متعلق اہم خبر آگئی


پنکچر پروف ٹائر کی ایک نئی قسم، جسے “ایئرلیس” یا “نان نیومیٹک” ٹائر کہتے ہیں، پہلی بار جنرل موٹرز (GM) نے شیورلیٹ بولٹ الیکٹرک گاڑی پر آزمایا ہے۔

ویب سائٹ سٹارٹ اپ پاکستان کے مطابق کمپنی کا خیال ہے کہ ہوا کے بغیر ٹائر گاڑیوں کی صنعت میں انقلاب لانے کی صلاحیت رکھتے ہیں اور ڈرائیونگ کا ایک محفوظ اور زیادہ آرام دہ تجربہ فراہم کرتے ہیں۔

پیٹرول کی ضرورت نہیں، جلدگاڑیاں بیکنگ پاوڈر سے چل سکیں گی

جی ایم کئی سالوں سے میکلین کے ساتھ مل کر بغیر ہوا کے ٹائروں کی تیاری پر کام کر رہا ہے۔ یہ ٹائر جامع مواد کی ایک پیچیدہ صف سے بنے ہوتے ہیں اور پنکچر اور دیگر قسم کے نقصان کو برداشت کر سکتے ہیں جس کی وجہ سے باقاعدہ ٹائر فلیٹ ہو سکتے ہیں۔

ہوا سے بھرے ہونے کے بجائے، ان ٹائروں میں سپوکس کا ایک سلسلہ ہوتا ہے جو گاڑی کے وزن کو سہارا دیتا ہے۔

بڑا سرپرائز ،موبائل فونز، کاریں سستی

جی ایم کی طرف سے ایک پریس ریلیز کے مطابق، ٹیسٹ ڈرائیو مشی گن کے ملفورڈ پروونگ گراؤنڈز میں کی گئی، جہاں گاڑی کو 80 میل فی گھنٹہ کی تیز رفتاری سمیت مختلف رفتار سے چلایا گیا۔

ٹیسٹ کے نتائج سے پتہ چلتا ہے کہ ہوا کے بغیر ٹائر روایتی ٹائروں کی طرح ہموار اور آرام دہ سواری فراہم کرتے ہیں۔

جی ایم اور میکلین اب بغیر ہوا کے ٹائر مارکیٹ میں لانے کے طریقے تلاش کر رہے ہیں۔ کمپنیوں کا خیال ہے کہ یہ ٹائر فضلہ کو کم کر سکتے ہیں اور ٹائروں کو ضائع کرنے کی ضرورت کو ختم کر کے ماحول کی حفاظت میں مدد کر سکتے ہیں۔

پاک سوزوکی کا ایک ہفتے کیلئے پروڈکشن پلانٹ بند کرنے کا اعلان

مزید برآں، بغیر ہوا کے ٹائر ٹائر کے نقصان کی وجہ سے پھٹنے اور دیگر قسم کے حادثات کے خطرے کو کم کرکے ڈرائیونگ کو محفوظ بنا سکتے ہیں۔


ٹیگز :
متعلقہ خبریں