کنگنا رناوت کے بیان پر بھارت میں ہنگامہ

فوٹو: فائل


 بالی ووڈ اداکار کنگنا رناوت کا کہنا ہے کہ اصل آزادی تو 2014میں ملی۔ 47 میں توبھیک ملی تھی۔

ایک بھارتی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے اداکارہ نے کہا سن 1947 میں ملنے والی آزادی تو بھیک تھی اور اصل آزادی تو سن 2014 میں ملی۔ یاد رہے کہ اسی برس مودی بھارت کے وزیر اعظم بنے تھے۔

کنگنا رناوت کا بیان  اور ان کی ویڈیو وائرل ہو چکا ہے جس پر کئی حلقوں کی جانب سے شدید تنقید سامنے آئی ہے۔کنگنا اس سے پہلے بھی متنازع بیان کے باعث تنقید کی زد میں رہی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: پپو مافیا آریان کا دفاع کر رہے ہیں، کنگنا رناوت

کنگنا رناؤت کی قوم پرست دائیں بازو کی جماعت بی جے پی کے رہنماؤں سے کافی قربت ہے اور وہ وقتاً فوقتا بی جے پی حکومت کی حمایت میں بیان بھی دیتی رہی ہیں۔ مودی حکومت نے بھی انہیں چند روز قبل ہی پدما شری جیسی اعلی شہری اعزاز سے بھی نوازا ہے۔

بالی وڈ کی اداکارہ کنگنا رناؤت کے بیان پر خود انہیں کے خیالات والے دائیں بازو کی رہنما بھی نکتہ چینی کر ہے ہیں۔ حکومت نے انہیں ایک اعلی شہری اعزاز سے نوازا تھا اور کانگریس اسے واپس لینے کا مطالبہ کر رہی ہے۔

کانگریس پارٹی کے سینیئر رہنما آنند شرما نے کہا ہے کہ ، وزیر اعظم کو اپنی خاموشی توڑتے ہوئے بتانا چاہیے کہ کیا وہ کنگنا کی رائے کی حمایت کرتے ہیں؟ اگر نہیں تو حکومت کو ایسے افراد کے خلاف مناسب کارروائی کرنی چاہیے۔

یہ بھی پڑھیں: انڈیا کا نام تبدیل کیا جائے: اداکارہ کنگنا رناوت کا مطالبہ

ٹویٹر نے غلط بیانی اور اشتعال انگیز بیانات کے سبب کنگنا پر پہلے سے ہی پابندی عائد کر رکھی ہے اور اس بیان کے بعد ان کے خلاف قانونی چارہ جوئی کا مطالبہ کیا جا رہا ہے۔


متعلقہ خبریں