وزارت خزانہ کی غیر شائستہ زبان کو روکا جائے: آڈیٹر جنرل آف پاکستان

وزارت خزانہ کی غیر شائستہ زبان کو روکا جائے: آڈیٹر جنرل آف پاکستان

اسلام آباد: آڈیٹرجنرل آف پاکستان وفاق کا ماتحت ادارہ نہیں ہے،  وزارت خزانہ کی جانب سے آڈیٹرجنرل آف پاکستان کےخلاف غیرشائستہ زبان کوروکا جائے۔

سلیپر کنکریٹ فیکٹری میں کروڑوں روپے کے گھپلے، آڈیٹر جنرل کی رپورٹ نے بھانڈا پھوڑ دیا

ہم نیوز کے مطابق یہ بات آڈیٹر جنرل آف پاکستان کی جانب سے وزارت خزانہ کو بھیجے جانے والے خط میں کہی گئی ہے۔

ذرائع کے مطابق بھیجے جانے والے خط میں کہا گیا ہے کہ آڈیٹرجنرل آف پاکستان ایک آزاد اورخود مختارادارہ ہے۔ خط میں واضح کیا گیا ہے کہ آڈیٹرجنرل آف پاکستان وزیراعظم کو رپورٹ کرنے کا پابند نہیں ہے۔

ہم نیوز کے مطابق وزارت خزانہ کو لکھے جانے والے خط میں کہا گیا ہے کہ آڈیٹرجنرل آف پاکستان صدرمملکت کو رپورٹ پیش کرتا ہے اورصدرمملکت فیڈریشن کا حصہ نہیں ہیں۔

آڈیٹر جنرل آف پاکستان کی جانب سے بھیجے جانے والے خط میں کہا گیا ہے کہ آڈیٹر جنرل آف پاکستان پرآئین کے آرٹیکل 170 ٹو کا اطلاق نہیں ہوتا ہے۔

وفاقی حکومت میں 15 ہزار ارب روپے کی بے ضابطگیوں کا انکشاف

ذرائع کے مطابق خط میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ آڈیٹر جنرل آف پاکستان کا آڈٹ اس کے اپنے قانون کے مطابق ہو سکتا ہے۔ خط میں لکھا گیا ہے کہ آڈیٹرجنرل آف پاکستان کی ضروری خریداری کا آڈٹ ہوسکتا ہے۔

ہم نیوز کے مطابق خط میں کہا گیا ہے کہ آڈیٹرجنرل آف پاکستان کے آڈٹ کے لیے آزاد اور خودمختار آڈیٹرتعینات ہو سکتا ہے۔ خط میں واضح کیا گیا ہے کہ وزارت خزانہ آزاد ادارہ نہیں ہے۔

ذرائع کے مطابق آڈیٹرجنرل آف پاکستان کی جانب سے لکھے جانے والے خط میں کہا گیا ہے کہ وزارت قانون کی جانب سے پیش کی گئی وضاحت درست نہیں ہے۔ خط میں واضح کیا گیا ہے کہ بیرونی آڈیٹرز نے کبھی بھی آڈیٹرجنرل آف پاکستان کا آڈٹ نہیں کیا۔

پاکستان پوسٹل سروسز: کروڑوں روپے کی خریداری میں بے قاعدگیوں کا انکشاف

ہم نیوز کے مطابق خط میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے آڈیٹر جنرل پاکستان کے آڈٹ کو روک رکھا ہے۔


متعلقہ خبریں