ایک گاڑی پر پیشی کیلئے بھر کرلائے گئے 70میں سے 20حوالاتی اسپتال پہنچ گئے


پنجاب پولیس کی تبدیلی کا خواب اب تک ادھورا ہے، اہلکاروں نے آج لاہور میں  ایک اور کارنامہ سرانجام دے دیا، عدالت میں پیشی کیلئے ایک گاڑی میں سترحوالاتی ملزموں کو بھر لائےحبس کے باعث بیس ملزم بے ہوش ہو کر اسپتال پہنچ گئے۔ 

فنڈز کی کمی یا پھر کچھ اور معاملہ  ہے، لاہور پولیس کے پاس ہتھکڑیوں کے بعد اب ملزموں کو عدالتوں میں پیش کرنے کے لئے گاڑیاں بھی کم پڑ گئی ہیں۔

کوٹ لکھپت پولیس کی نااہلی ملزموں پر بھاری پڑ گئی،پولیس اہلکار جوا ایکٹ کے مقدمہ میں گرفتار ستر افراد کو ایک ہی گاڑی میں پیشی کے لئے ماڈل ٹاون کچہری لے کر پہنچےتھے، راستے میں شدید گرمی نے ملزموں کو نڈھال کر ڈالااور عدالت میں حاضری سے پہلے ہی بیس ملزم بے ہوش ہو گئے۔

ملزموں کی حالت غیر ہونے پر ریسکیو1122 کو طلب کرنا پڑا ۔ ریسکیو اہلکاروں نے متاثرہ افراد کو جنرل اسپتال پہنچایا، بے ہوش ہونے والوں میں عمران علی، فرید، لیاقت علی، غلام علی، نذیر احمد، علی رضا اور خرم شہزاد سمیت دوسرے شامل تھے۔ ڈاکٹرز کے مطابق تمام افراد کی حالت خطرے سے باہر ہے۔

دس ماہ پہلے لاہور پولیس کی جانب سے گرفتار افراد کو رسیوں میں باندھ کر عدالت پیش کیا گیا تھا جس کے بعد متعلقہ حکام نے بڑے دعوے کئے مگر آج واقعے نے تبدیلی کا پول کھول دیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے: پنجاب پولیس اہلکاروں کی طرف سےنیب افسران کو خوفناک نتائج کی دھمکیاں


متعلقہ خبریں