بھارت کی مسلمان خواتین کے لیے حج قوانین میں نرمی


اسلام آباد: سعودی عرب نے بھارت کی مسلمان خواتین کے لیے حج قوانین میں نرمی کرتے ہوئے 45 سال سے زائد عمر کی زائرین کو بنا محرم حجاز مقدس آنے کی اجازت دے دی ہے۔

سعودی عرب کی جانب سے اس اجازت کے بعد بھارت کی مسلمان خواتین کو بغیر محرم چار حاجیوں کے گروپ کے ہمرزہ حج  کے لیے کی اجازت ہوگی۔

عالمی خبررساں ایجنسی کے مطابق 2014 میں  بھارت کی حکومت نے سعودی عرب سے درخواست کی تھی کہ وہ 45 برس سے زائد عمر کی بھارتی مسلمان خواتین کو محرم کے بغیر حج کی سعادت حاصل کرنے کے لیے آنے کی اجازت دے۔

خبررساں ادارے کے مطابق سعودی عرب نے بھارت کی پیش کردہ تجویز منظور کرتے ہوئے ہوئے حج قوانین میں بھارت کی مسلمان خواتین کے لیے نرمی کی ہے۔

عالمی خبررساں ایجنسی کے مطابق بھارت کی اقلیتی امور کی وزارت کی جانب سے جاری کردہ مراسلے میں کہا گیا ہے کہ 45 یا اس سے زائد عمر کی خواتین کو چار کے گروپ میں مرد سرپرست کے بغیرحج پرجانے کی اجاز ت ہوگی۔

مراسلے کے مطابق حج پر بنا محرم کے جانے کی خواہش مند خواتین کو اپنے مکتبہ فکر سے اجازت حاصل کرنا لازمی ہوگا۔

فریضہ حج کی ادائیگی کے لیے عموماً خواتین کو کسی محرم کے ساتھ جانا لازمی ہوتا ہے۔ محرم میں خاوند، بیٹا، باپ، تایا، ماموں، چچا، بھائی، بھتیجا اور بھانجا شامل ہیں۔

سعودی عرب میں حج کے لیے سخت قوانین نافذ ہیں جس کے تحت خواتین اپنے محرم کے بغیر حج کےلیے نہیں جاسکتی ہیں لیکن سعودی حکومت نے بھارتی حکومت کی درخواست پر حج قوانین میں نرمی کردی ہے۔


متعلقہ خبریں