پارلیمانی کمشین سب سامنے لے آئے گا،حمزہ شہباز


لاہور: پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما حمزہ شہباز نے کہا ہے کہ ایک وقت تھا جب مجھے لاہور سے باہر جانے کی اجازت نہیں تھی اور وہ دور مشرف کا تھا۔ ہم نے تو جیل کاٹی ہے لیکن عمران خان دو دن جیل نہیں کاٹ سکتے۔ پارلیمانی کمشین بنے گا  تو دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے گا۔

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ابھی تو دھاندلی کے زخم ماند  نہیں پڑے۔ ابھی تو بہت کچھ دیکھنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کرنے کے لیے بہت مشکلات اٹھانی پڑتی ہیں، جیلیں کاٹنی پڑتی ہیں، اپوزیشن کو برداشت کرنا پڑتا ہے۔

انہوں نے حکومت کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ آج پنجاب اسمبلی میں کون موجود ہے؟ وہ لوگ جن کا کوئی کردار نہیں۔ کیا ایسے لوگ ہماری قوم کے لیے اہل ہیں؟ ان کا کہنا تھا کہ ہمارے دور میں ترقی ہوئی جس کی گواہی چین بھی دیتا ہے۔ ہم نے قوم کو فائدہ پہنچایا اور اب بھی فیصلہ عوام ہی کرے گی۔

انہوں نے کہا کہ آج تک ایسا طرز حکومت نہیں دیکھا جیسا کے اب دیکھ رہے ہیں، عوام نے بھی دیکھ لیا کہ کتنے دعوے پورے ہوئے اورکتنے نہیں۔ آج حقیقت سب کے سامنے ہے۔

رہنما مسلم لیگ ن کا کہنا تھا کہ آج سب کے سامنے حقائق رکھ دیئے ہیں تاکہ سب جان سکیں کہ کیا ہورہا ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ پشاورمیڑو بس منصوبے کی تحقیقات ہونی چاہیے۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ آج باقی ملزما ن کو کوئی کیوں نہیں پوچھتا۔ پی ٹی آئی کے کارکنوں کو کوئی کیوں نہیں پوچھتا؟ پریس کانفرنس کے دوران ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ چند ووٹ زیادہ لے کرحکومتیں بچا نہیں کرتیں۔

انہوں نے کہا کہ بی آر ٹی کا ٹھیکہ کس کو دیا گیا؟ نیب پوچھے؟ سب کے سامنے ساری صورتحال ہے۔ دھاندلی کو بے نقاب  کیے بنا سکون سے نہیں رہیں گے۔


متعلقہ خبریں