سرکاری عمارات کو عوامی استعمال میں لایا جا سکتا ہے، عمران خان


اسلام آباد: اہم سرکاری عمارات کو عوام کے استعمال میں لانے کے معاملہ پر وزیراعظم عمران خان نے چاروں گورنرز، وزرائے اعلیٰ اور وفاقی وزرا کو خط لکھ دیا ہے۔

عمران خان نے اپنے خط میں کہا ہے کہ ملک کو اس وقت بڑے معاشی بحران کا سامنا ہے، پاکستان کا قرضہ 30 کھرب روپے سے زیادہ ہو چکا ہے اور روزانہ صرف چھ ارب روپے سود کی مد میں ادا کیے جا رہے ہیں۔

وزیراعظم پاکستان نے بتایا کہ انہوں نے 1100 کنال کے وزیراعظم ہاؤس میں رہنے کی بجائے معمولی گھر میں رہنے کا فیصلہ کیا کیونکہ گورنرز سمیت وزرائے اعلیٰ کے زیر استعمال سرکاری عمارات کو عوامی استعمال میں لا کر فائدہ اٹھایا جا سکتا ہے۔

اسی حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ مستقبل میں ان عمارات کو اچھے استعمال میں لانے کے لیے اقدامات کیے جائیں گے جس کے لیے قومی سطح کی ایک اور کمیٹی قائم کر دی گئی ہے۔

کمیٹی کی سربراہی خود عمران خان کریں گے۔ اس کے علاوہ اس کمیٹی میں شفقت محمود، محمد اعظم خان، انجینئر عامر حسن، تہمینہ جنجوعہ بھی شامل ہیں۔


متعلقہ خبریں