بشکیک کی صورتحال قابو میں، پُرتشدد مظاہرین کی شناخت اور گرفتاری جاری، کرغز حکومت

کرغزستان

کرغز حکومت اور پاکستانی سفیر کے جائزے کے مطابق مجموعی صورتحال اس وقت مکمل طور پر قابو میں ہے جبکہ حساس مقامات پر قانون نافذ کرنے والے ادارے تعینات ہیں۔

مقامی حکومت کے مطابق بشکیک کی صورتحال صبح دس بجے سے کنٹرول میں ہے، صدر اور کابینہ سمیت کرغز حکومت صورتحال پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔ تمام مظاہرین قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ مذاکرات کے بعد منتشر ہو چکے ہیں، پُرتشدد مظاہرین کی شناخت اور انہیں گرفتار کیا جا رہا ہے۔

بشکیک حملے کے مجرمان کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا، کرغزستان

پاکستانی سفارتخانہ کے عملے اور سفیر نے ہاسٹلز اور ہسپتال کا دورہ کیا اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ ہاسٹلز کے تحفظ کو کوارڈنیٹ کیا گیا ہے۔ الگ تھلگ اپارٹمنٹس میں رہنے والے طلباء کو بھی ہاسٹلز میں شفٹ کردیا گیا ہے۔

پاکستانی سفارتخانے کی جانب سے پاکستانی طلباء کی سہولت کے لیے کرغز میڈیکل یونیورسٹیوں سے آن لائن کلاسز کے لیے رابطہ کیا گیا ہے۔ اس دوران ہنگامی نمبر بھی متعلقہ مسائل کو کوآرڈینیٹ کرنے کے لیے کام کر رہے ہیں۔

وزیراعظم کا اسحاق ڈار کو کرغزستان بھیجنے کا فیصلہ

دوسری طرف نائب وزیرِ اعظم اور وزیر خارجہ اسحٰق ڈار، منسٹر امیر مقام کے ہمراہ کل کرغزستان کا دورہ کریں گے۔ وزیر خارجہ بعد میں قزاقستان میں ایس سی او کانفرنس میں شرکت کریں گے۔

اطلاعات کے مطابق تقریباً 40 پاکستانی طلباء معمول کی ایرونومیڈ چارٹرڈ فلائٹ کے ذریعے لاہور واپس آچکے ہیں۔ اس حوالے سے حکومتِ پاکستان کل شام اسلام آباد سے بشکیک، کرغزستان اور واپس اسلام آباد کے لیے جہاز بھیجنے کا منصوبہ بنا رہی ہے۔


ٹیگز :
متعلقہ خبریں