اسحاق ڈار کی بطور ڈپٹی وزیر اعظم تعیناتی چیلنج

Ishaq Dar

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما شیر افضل مروت نے اسحاق ڈار کی بطور ڈپٹی وزیر اعظم تعیناتی کو اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیلنج کر دیا۔

پی ٹی آئی کے رہنما شیر افضل مروت نے وکیل ریاض حنیف راہی کے ذریعے اسلام آباد ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی۔ درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا کہ اسحاق ڈار پہلے ہی بطور وفاقی وزیر خارجہ کام کر رہے ہیں۔

درخواست میں کہا کہ 28 اپریل کو وزیراعظم کی منظوری سے اسحاق ڈار کی بطور ڈپٹی وزیر اعظم تعیناتی کا نوٹیفکیشن جاری کیا گیا۔ وزیراعظم کا عہدہ ایک آئینی عہدہ ہے اور ڈپٹی وزیر اعظم کے عہدے سے آئین پاکستان ناواقف ہے۔

انہوں نے کہا کہ آئین میں ایسی کوئی شق نہیں جو کابینہ ڈویژن کو ڈپٹی وزیراعظم کی تعیناتی کا نوٹیفکیشن جاری کرنے کی اجازت دے۔ عوام کے خرچے پر ایک ہی شخص کو 2 عہدے ذاتی مفاد کے لیے عطا کیے گئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: گندم درآمد اسکینڈل کی تحقیقاتی کمیٹی کی رپورٹ منظر عام پر نہ آسکی

شیر افضل مروت نے درخواست میں مؤقف اختیار کیا کہ ایک شخص جو غیر قانونی طریقے سے تعینات ہوا ہو وہ ریاست کی مراعات حاصل نہیں کر سکتا۔ اسحاق ڈار کی بطور ڈپٹی وزیر اعظم تعیناتی کا 28 اپریل 2024 کا نوٹیفکیشن کالعدم قرار دیا جائے۔

درخواست میں عدالت سے استدعا کی گئی کہ درخواست گزار کو یہ اہم معاملہ عدالت کے سامنے رکھنے پر معاوضہ دیا جائے۔

درخواست میں وفاقی حکومت، سیکرٹری کابینہ ڈویژن، وزیراعظم اور اسحاق ڈار کو فریق بنایا گیا ہے۔


متعلقہ خبریں