امریکا پاکستان سے 25 ہزار افغانوں کی بیدخلی روکنے کیلئے سرگرم

افغان مہاجرین

امریکی حکومت 25 ہزار افغان باشندوں کی بے دخلی روکنے کیلئے نگران حکومت سے مسلسل رابطے میں ہے۔

اسلام آباد میں امریکی سفارتخانے نے ان افغان باشندوں کے تحفظ کیلئے  ہاٹ لائن قائم کرنے کے علاوہ شناخت کے لیے خطوط بھی جاری کر دیئے ہیں۔ یہ وہ لوگ ہیں جو کابل میں طالبان کے بر سر اقتدار آنے سے کچھ قبل یا بعد افغانستان چھوڑ کر پاکستان ا ٓ گئے تھے۔

امریکی حکام کے بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکا کو سب سے زیادہ تشو یش خطرات میں گھرے افراد کی سلامتی کے حوالے سے ہے جو امریکا منتقلی کے خواہش مند بھی ہیں، ان کی سلامتی اور بحالی پاکستان اور امریکا دونوں کے مفاد میں ہے۔

تارکین وطن کی بیدخلی ، 496 غیر ملکی قیدیوں کو بھی ڈی پورٹ کر دیا گیا

امریکی سفارت خانے کے تر جمان جوناتھن نے کہا کہ پاکستان افغان پناہ گزینوں کی جبری بے دخلی کے منصوبے پر عمل کررہا ہے جن کے پاس پاکستان مین رہنے کا قانونی جواز نہیں۔ تاہم ڈیڈ لائن کے خاتمے سے قبل اور بعد میں امریکی سفیر  نے نگران وزیراعظم انوار الحق کاکڑ اور نگران وزیر خارجہ جلیل عباس جیلانی سے رابطے کیے۔

امریکا کے مطابق 25 ہزار افغان باشندے امریکی امیگریشن اور وہاں بحالی کے مستحق ہیں، ان میں مختلف کیٹیگری کے لوگ شامل ہیں، اس حوالے سے حکومت پاکستان کیساتھ ایک فہرست بھی شیئر کی گئی ہے۔


متعلقہ خبریں