کچے کے ڈاکووں کا پولیس اسٹیشن پر دھاوا ، ایس ایچ او بیٹے اور 3 اہلکاروں سمیت اغواء


کچے کے ڈاکوؤں نے شکار پور میں خانپور کے قریب واقع کوٹ شاہو پولیس اسٹیشن پر حملہ کرکے ایس ایچ او، اس کے بیٹے اور 3 اہلکاروں کو اغوا کر لیا۔

پولیس حکام کے مطابق اغواء ہونے والوں میں ایس ایچ او کوٹ شاہو محبوب بروہی، ان کا بیٹا محمد بروہی ،اہلکار نسیم گوپانگ، جان محمد اور ایاز علی شامل ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ تھانے کی حدود میں ہی پولیس کے فیملی کوارٹرز بھی ہیں، ایس ایچ او کا بیٹا محمد بروہی بھی تھانے کے قریب ہی موجود تھا جسے ڈاکوؤں نے یرغمال بنا لیا۔

کچے کے ڈاکوؤں سے مقابلے کے لئے عوام کو مسلح کرنے کی تجویز

حکام نے بتایا کہ ڈاکو تھانے میں موجود سرکاری ہتھیار بھی ساتھ لیکر کچے کی جانب فرار ہوگئے، اطلاع ملنے کے بعد پولیس کی بھاری نفری بھی کچے کی طرف روانہ ہو گئی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ کوٹ شاہو تھانہ کی حدود میں کچھ روز قبل پولیس نے آپریشن کے دوران دو ڈاکو گرفتار کیے تھے، جن کے سر کی قیمت بھی لگائی گئی تھی۔

کراچی پولیس کا ڈاکوؤں کے قتل پر شہری کو انعام دینے کا اعلان

کچے کے ڈاکوؤں کی جانب سے مطالبہ کیا جا رہا تھا کہ ان کے ساتھیوں کو رہا کیا جائے، تاہم پولیس کی جانب سے ڈاکوؤں کو آزاد نہیں کیا گیا جس کے رد عمل میں ڈاکووں نے کوٹ شاہو تھانے کے عملے کو یرغمال بنا لیا۔

دوسری جانب ڈاکووں کا کہنا ہے کہ جب تک ہمارے ساتھیوں کو آزاد نہیں کیا جائے گا ، اس وقت تک ہم پولیس اہلکاروں کو آزاد نہیں کریں گے۔

 

 

 

 

 

 


متعلقہ خبریں