ایف آئی اے، چار بڑے اسکینڈلز کی تحقیقات کا آغاز

چیف جسٹس کیخلاف مہم، ایف آئی اے نے عمران ریاض اور اسد طور کو طلب کرلیا

اسلام آباد: وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) نے چار بڑے اسکینڈلز کی تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے۔

آٹاتقسیم کی مد میں 20 ارب کی چوری ،شاہد خاقان عباسی نے وضاحت کردی

اس ضمن میں ایف آئی اے کی جانب سے جاری کردہ اعلامیے کے تحت ڈالر کے انٹربینک ریٹ سے زائد پر ایل سیز کھولنے پہ بینکوں کے خلاف انکوائری شروع کردی گئی ہے۔ آٹھ بینکوں نے 65 ارب روپے سے زائد صرف ڈالر ریٹ میں کمائے۔

اعلامیے کے مطابق موٹروے کیلئے زمین کی خریداری میں بھی کرپشن کی شکایت پر انکوائری کا آغاز کیا گیا ہے، زمین کی خریداری میں 32 ارب روپے کی خرد برد پر تحقیقات کا آغاز کیا گیا ہے۔

ایف آئی اے کے اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ گزشتہ سال سیلاب متاثرین کو دی گئی امداد میں بھی کرپشن الزامات پر انکوائری شروع کی گئی ہے۔

ایف آئی اے، آن لائن لون ایپ کے ذریعے فراڈ کرنے والے گروہ کا سربراہ گرفتار

اس حوالے سے کہا گیا ہے کہ سانگھڑ اور دادو میں 103 افراد کو 31 ہزار ٹینٹ، راشن اور امدادی سامان دینے کے معاملے پر انکوائری کی گئی ہے۔

ایف آئی اے اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ مفت آٹا اسکیم میں 18 لاکھ بیگز کی مبینہ خرد برد اور خراب آٹے کی تقسیم پر بھی انکوائری کا آغاز کیا گیا ہے۔

نیب میں 38 فیصد بے بنیاد کرپشن کیسز درج ہونے کا انکشاف

ایف آئی اے نے اس حوالے سے تمام زونز کو چاروں کیسز میں تحقیقات کر کے ہیڈ آفس رپورٹ کرنے کی ہدایت کردی ہے۔


متعلقہ خبریں