پلے سٹور نےقرضہ ایپلی کیشنز کیخلاف نئی پالیسی متعارف کرادی


گوگل نے پاکستان بھر میں صارفین کو قرض دینے والی جعلی اور غیر رجسٹرڈ ایپس سے تحفظ فراہم کرنے کے عزم کے ساتھ پرسنل لون ایپلی کیشنز کے لیے نئی پالیسی متعارف کرا دی ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق نافذ العمل نئی شرائط کے تحت قرض دینے والی غیر بینکاری فنانس کمپنی  کو صرف ایک ڈیجیٹل لینڈنگ ایپ شائع کرنے کی اجازت ہوگی۔

غیرقانونی قرضہ ایپس کا 3 سال میں 15 ہزار سے زائدصارفین کے ساتھ 17 ارب کا فراڈ

ایسی کمپنیاں جوایک سے زیادہ ڈی ایل اے شائع کرنے کی کوشش کریں گی ان کے ڈیویلپر اکاؤنٹ سمیت تمام متعلقہ اکاؤنٹس ختم کردئیے جائیں گے۔

پاکستانی صارفین کے لیے پرسنل لون ایپس بنانے والے ڈویلپرز کو پرسنل لون ایپ ڈیکلیئریشن فارم بھرنا لازم ہوگا اور اپنی ایپ شائع کرنے سے قبل ضروری دستاویزات بھی جمع کرانا ہوں گے۔

75 غیرقانونی قرضہ دینے والی ایپس کاایک لاکھ لوگوں سے 1 ارب روپے کا فراڈ

اسی کے ساتھ انہیں پاکستان میں ڈیجیٹل قرض دینے یا سہولت فراہم کرنے کے لیے ایس ای سی پی کی جانب سے منظوری کا ثبوت جمع کرانا ہوگا۔

گوگل پلے مذکورہ ایپس کے لیے نافذالعمل ریگولیٹری اور لائسنسنگ کی ضروریات کی تعمیل سے متعلق اضافی معلومات یا دستاویزات کی بھی درخواست کرے گا۔

پاکستان میں بغیر کسی ڈیکلیئریشن اور لائسنس کے چلنے والی پرسنل لون ایپس کو پلے اسٹور سے ہٹا دیا جائے گا۔


ٹیگز :
متعلقہ خبریں