ایک سال میں بجلی کی قیمت میں 50 فیصد اضافہ


ایک سال کے دوران بجلی کی قیمتوں میں پچاس فیصد سے زائد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے، گھریلو صارفین کی بجلی پچاس فیصد مہنگی کی گئی۔ 

نیپرا دستاویزات کے مطابق فیول ایڈجسٹمنٹ اور سرچارجز کی مد میں بجلی مہنگی کی گئی۔ بنیادی ٹیرف میں 10 روپے اضافہ ہوا جبکہ گھریلو صارفین کیلئے بجلی کی قیمت میں 8 روپے پچاس پیسے کا اضافہ ہوا۔ گھریلو صارفین کا ٹیرف 18 روپے 4 پیسے سے بڑھ کر 26 روپے 54 پیسے ہوگیا۔

ایران سے بجلی کا معاہدہ، فی یونٹ کی قیمت کیا؟ جانیئے

دستاویزات میں بتایا گیا کہ کمرشل صارفین کی بجلی 11 روپے فی یونٹ مہنگی جبکہ صنعتی صارفین کی بجلی 9 روپے 55 پیسے مہنگی کی گئی۔ اسی طرح زرعی صارفین کے ٹیرف میں 9 روپے 14 پیسے اضافہ کیا گیا۔

دستاویزات کے مطابق توانائی کی قیمت 655 ارب سے بڑھ کر 1152 ارب تک جاپہنچی جبکہ کیپسٹی چارجز 794 ارب سے بڑھ کر 1251 ارب ہوگئے۔ بجلی کی پیداواری لاگت میں 22 فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔


متعلقہ خبریں