پنجاب میں حکومت اور اپوزیشن کا میچ کرانے کا فیصلہ

صوبائی وزیر نے کہا کہ جمعیت علمائے اسلام (جے یو آئی) ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان خیبر پختونخوا اور بلوچستان کے عوام کو سہانے خواب دکھا کے ووٹ لیتے رہے ہیں۔

پنجاب میں سیاست کے محاذ پر دلچسپ پیش رفت ہوئی ہے۔ حکومت پنجاب اور اپوزیشن کے درمیان کرکٹ کا میدان سجانے کی تیاری کی جا رہی ہے۔

پنجاب حکومت کے ترجمان فیاض الحسن چوہان نے حکومت اور اپوزیشن کے درمیان کرکٹ میچ کروانے کا فیصلہ کیا ہے۔ ترجمان پنجاب حکومت نے اپوزیشن قیادت سے باضابطہ رابطہ بھی کرلیا ہے۔

ترجمان پنجاب حکومت فیاض چوہان نے پیپلز پارٹی کے پارلیمانی لیڈر سید حسن مرتضی اور مسلم لیگ ن کی رکن پنجاب اسمبلی حنا پرویز بٹ سے رابطہ کیا ہے۔

فیاض چوہان نے حکومت اور اپوزیشن کے درمیان کرکٹ میچ کی تجویز پیش کی ہے۔ ٹیپ بال میچ ستمبر کے وسط میں گورنر ہاؤس یا قذافی اسٹیڈیم میں کروایا جائے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومتی ٹیم کو حتمی شکل دے دی گئی ہے۔ ترجمان پنجاب نے اپوزیشن کو بھی جلد اپنی ٹیم کو حتمی شکل دینے کی درخواست کی ہے۔

حکومت پنجاب کی ٹیم میں صوبائی وزیر فیاض الحسن چوہان، صوبائی وزیر حافظ ممتازاحمد، سابق وزیر سمیع اللہ چویدری، صوبائی وزیر میاں اسلم اقبال، وزیر کھیل تیمور بھٹی، وزیر تعلیم ڈاکٹر مراد راس، ایم پی اے ندیم عباس بارا، صوبائی وزیرعنصر مجید نیازی، ملک عمر فاروق، حنیف پتافی، صوبائی وزرا حافظ عمار یاسر، سردار حسین بہادر دریشک اور راجہ یاسر ہمایوں شامل ہیں۔


متعلقہ خبریں