پی پی: یوسف رضا گیلانی کی شکست عدالت میں چیلنج کرنیکا اعلان

حکومت نے بڑے وعدے کیے، لارے لگائے، سب کا سب فراڈ اور جھوٹ نکلا: راجہ پرویز اشرف

فائل فوٹو


اسلام آباد: پاکستان پیپلزپارٹی نے پی ڈی ایم کے متفقہ امیدوار برائے چیئرمین سینیٹ سید یوسف رضا گیلانی کی شکست پرعدالت میں نتیجے کو چیلنج کرنے کا اعلان کیا ہے۔

چیئرمین سینیٹ کا انتخاب: گیلانی کی شکست کے بعد پی پی کا دو آپشنز پر غور

ہم نیوز کے مطابق یہ اعلان سابق وزیراعظم اور پی پی کے مرکزی رہنما راجہ پرویز اشرف نے میڈیا سے بات چیت میں کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سید یوسف رضا گیلانی کو اکثریت ہونے کے باوجود ہرایا گیا ہے۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ غیر آئینی اورغیر قانونی طریقے سے یوسف رضا گیلانی کو ہرایا گیا۔ انہوں ںے کہا کہ ایوان میں 6 خفیہ کیمرے لگائے گئے تھے۔

پی پی کے مرکزی رہنما نے کہا کہ 7 اراکین نے یوسف رضا گیلانی کے نام کے اوپر مہر لگائی۔ انہوں نے کہا کہ یوسف رضا گیلانی کے 7 ووٹ مسترد کرکے انہیں ہرایا گیا۔

صادق سنجرانی چیئرمین، مرزا افریدی ڈپٹی چیئرمین سینیٹ منتخب، پی ڈی ایم کو شکست

ہم نیوز کے مطابق راجہ پرویز اشرف نے اس امید کا اظہار کیا کہ عدالت میں یوسف رضا گیلانی کامیاب ہوں گے۔ انہوں ںے الزام عائد کیا کہ حکومت نے ہر حربہ استعمال کرکے الیکشن چوری کیا ہے۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ حکومت کے دن گنے جاچکے ہیں۔ انہوں نے دعویٰ کیا ہ یوسف رضا گیلانی نے چیئرمین سینیٹ کا الیکشن جیت لیا ہے۔

بدقسمتی ہے کہ احمد فراز کا بیٹا کیمروں کا دفاع کررہا ہے، شاہد خاقان

ہم نیوز کے مطابق پی پی کے مرکزی رہنما راجہ پرویز اشرف نے کہا کہ جو چیئرمین بٹھایا گیا ہے کہ وہ جمہوریت کی نفی کرکے بٹھایا گیا ہے۔ انہوں ںے کہا کہ جمہوریت پسندوں کا سر شرم سے جھک گیا ہے۔


متعلقہ خبریں