دشمنی پر پانچ افراد قتل، لواحقین کا پنجاب اسمبلی کے باہر احتجاج


لاہور: پھلروان میں قتل کیے جانے والے پانچ افراد کے لواحقین نے پنجاب اسمبلی کے سامنے نعشیں رکھ کراحتجاج کرتے ہوئے مال روڈ بند کردی۔ پسماندگان انصاف کی فراہمی کا مطالبہ کرتے ہوئے قاتلوں کی فوری گرفتاری کا مطالبہ کررہے ہیں۔

ہم نیوز کے مطابق لاہور کے نواحی علاقے پھلروان میں قتل کیے جانے والے پانچ افراد کی میتیں لے کر جب لواحقین پنجاب اسمبلی جانے کے لیے مرکزی شاہراہ پر پہنچے تو پولیس نے انہیں روکنے کی کوشش کی لیکن انہوں نے تمام رکاوٹیں ہٹا دیں۔

اس موقع پر احتجاجی مظاہرین اورپولیس کے درمیان تصادم بھی ہوا۔

لاہور کے تھانہ برکی کی حدود میں واقع موضع پھلروان میں جائیداد کے تنازعہ پر ایک ہی خاندان کے پانچ افراد کو قتل کردیا گیا تھا۔

جاں بحق ہونے والوں میں 40 سالہ قربان، 42 سالہ عبد الرشید، 16 سالہ تنویر، 17 سالہ قدیر اور30 سالہ بشیر شامل ہیں۔ مقتولین میں تین سگے بھائی ہیں۔

پولیس کے مطابق علاقے میں لاٹھی گروپ اور شاطر گروپ کے درمیان دیرینہ دشمنی چلی آ رہی ہے۔ اسی دشمنی کی بنیاد پر لاٹھی گروپ کے مسلح افراد نے تلخ کلامی کے بعد شاطر گروپ پر اندھا دھند فائرنگ کی۔

ملزمان فائرنگ کرتے ہوئے جائے وقوع سے فرار ہو گئے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ دونوں گروپوں کی دشمنی کے باعث پہلے بھی چارافراد قتل ہو چکے ہیں۔

ہم نیوز کے مطابق ڈی آئی جی آپریشنز نے ایس پی کینٹ کو تحقیقات کا حکم دے دیا ہے اور پولیس کی بھاری نفری نے علاقے میں پہنچ کر ملزمان کی تلاش بھی شروع کر دی۔


متعلقہ خبریں