ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ، دفعہ 144 نافذ کر کے بھاری نفری تعینات کرنے کا حکم

فائل فوٹو


اسلام آباد: وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کی ضلعی انتظامیہ نےایون فیلڈ ریفرنس کے فیصلے کے موقع پر امن وامان کی صورتحال برقرار رکھنے کے لیے احتساب عدالت کے اردگرد دفعہ 144 نافذ کرتے ہوئے رینجرز اور پولیس کے 900 اہلکار تعینات کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ضلعی انتظامیہ کے مطابق ہنگامی صورتحال پر قابو پانے کے لیے انتظامات کو حتمی شکل دے دی گئی ہے۔

اطلاعات کے مطابق احتساب عدالت کے اطراف پولیس کے 400  اور رینجرز کے 500 اہلکار تعینات کیے جائیں گے، تمام راستے عام ٹریفک کے لیے بند ہوں گے اور کڑی نگرانی بھی کی جائے گی۔

اسلام آباد کی احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم نوازشریف اور ان کے بچوں کے خلاف نو ماہ 20 روز تک جاری رہنے والے ایون فیلڈ ریفرنس(لندن فلیٹ) کا محفوظ کیا گیا فیصلہ چھ جولائی کو سنانے کا اعلان کیا تھا۔

نواز شریف نے عدالت سے استدعا کی تھی کہ ان کی وطن واپسی تک فیصلہ محفوظ رکھا جائے وہ کلثوم نواز کے صحت یاب ہوتے ہی پاکستان آجائیں گے۔

احتساب عدالت نے ایون فیلڈ ریفرنس کا فیصلہ مؤخر کرنے کی نوازشریف اور مریم نواز کی درخواستیں جمعہ کو سماعت کے لیے مقرر کر رکھی ہیں۔


متعلقہ خبریں