قاسم سوری کی جائیداد کی تفصیلات طلب ، حکومت بتائے بیرون ملک کیسے گئے ؟ سپریم کورٹ

سپریم کورٹ

سپریم کورٹ نے سابق ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم سوری کی جائیداف کی تفصیلات طلب کرتے ہوئے ان کے بیرون ملک جانے  پر وفاق اور  ایف آئی اے کو نوٹس جاری کر دیئے۔

چیف جسٹس قاضی فائز عیسٰی کی سربراہی میں 4 رکنی بنچ نے قاسم سوری کی ڈی سیٹ کرنے کے الیکشن ٹریبونل فیصلے کے خلاف اپیل پرسماعت کی۔

مخصوص نشستوں کا کیس، پی ٹی آئی سال کا وقت لینے کے باوجود انٹرا پارٹی الیکشن نہ کرواسکی، چیف جسٹس

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ہم سوچ رہے ہیں اس کیس میں کیا کریں؟ قاسم سوری کے وکیل نعیم بخاری نے کہا کہ آپ صرف مجھے سن لیں اور فیصلہ دے دیں۔ چیف جسٹس نے وکیل سے استفسار کیا کہ کیا آپ کا قاسم سوری سے رابطہ نہیں ، وکیل نے بتایا کہ جی میرا بالکل قاسم سوری کے ساتھ رابطہ نہیں ۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ آپ اپنے کلائنٹ کو پکڑ کر تو نہیں لا سکتے، انہیں بتائیں کہ سپریم کورٹ کو ایسے استعمال نہیں ہونے دیں گے، وکیل نے کہا کہ جو بھی کرنا ہے جلدی سے کر دیں، آپ مجھے حکم دیتے ہیں تو میں کیس چھوڑ دیتا ہوں۔

ذوالفقار علی بھٹو معصوم شخص تھے ، غیر آئینی عدالت نے سزا دی ، سپریم کورٹ

چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے نعیم بخاری سے مکالمہ کیا کہ میں اتنے خوبصورت شخص کو کیسے کہہ سکتا ہوں کہ کیس چھوڑ دیں؟

جسٹس مسرت ہلالی نے کہا کہ آپ کورٹ سے کیوں بھاگ رہے ہیں؟ آپ ان کو ہمارا پیغام پہنچائیں، نعیم بخاری نے کہا کہ میرا کوئی رابطہ ہی نہیں ہے، پیغام کیسے بھیجوں؟

بعد ازاں عدالت نے کیس کی سماعت غیر معینہ مدت تک ملتوی کر دی۔ اسی کے ساتھ چیف جسٹس نے آج کی سماعت کا تحریری حکمنامہ لکھوایا جس میں کہا گیا کہ اخباروں میں اشتہار دیا لیکن قاسم سوری نہیں آئے، وکیل نعیم بخاری کا بھی اپنے کلائنٹ سے رابطہ نہیں، وفاقی حکومت، بلوچستان حکومت اور ایف آئی اے کو نوٹس جاری کرتے ہیں۔

سرویلینس اور شہریوں کی کال ریکارڈنگ کا سسٹم بادی النظر میں قانوناً درست نہیں،اسلام آباد ہائیکورٹ

عدالتی حکم نامے میں کہا گیا کہ بلوچستان حکومت قاسم سوری کی ساری جائیداد کی تفصیل جمع کرائے، وفاقی حکومت اور ایف آئی اے بتائے کہ قاسم سوری کیسے بیرون ملک گئے۔

 

 

 


متعلقہ خبریں