فلور ملز ایسوسی ایشن نے ود ہولڈنگ ٹیکس مسترد کرتے ہوئے 10 جولائی سے ملک گیر ہڑتال کا اعلان کر دیا۔

فلور ملز

پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن نے حکومت کی جانب سے عائد ود ہولڈنگ ٹیکس کے خلاف احتجاج کا اعلان کر دیا۔

مرکزی چیئرمین پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن عاصم رضا نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ جمعرات 11 جولائی سے آٹے کی سپلائی بند کرتے ہوئے ملک بھر میں احتجاج کریں گے۔ ہم ٹیکس میں اضافے کو کسی صورت نہیں مانتے، ہمارا مطالبہ ہے کہ حکومت ودہولڈنگ ٹیکس کو ختم کرے۔

وزیر اطلاعات پنجاب عظمیٰ بخاری کو ثقافت کا چارج بھی سونپ دیا گیا

عاصم رضا نے کہا ہے کہ بدھ کے روز سے گندم کی واشنگ بند کردی جائے گی اور 11 جولائی سے مارکیٹ کو آٹے کی سپلائی کرنا بند کر دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ود ہولڈنگ ٹیکس دینا ہمارے بس میں نہیں ہے۔ ہمارا  حکومت سےمطالبہ ہے کہ وہ ود ہولڈنگ ٹیکس کو فی الفور ختم کرے، ہم ایسے کسی اضافے کو قبول نہیں کرتے۔

چیئرمین پاکستان فلور ملز ایسویشن کا کہنا تھا کہ ہمارا مقصد ہر گز عوام کو تکلیف دینا نہیں ہے لیکن ہماری فلور ملز بھی ود ہولڈنگ ٹیکس برداشت نہیں کرسکتیں۔ انکا مزید کہنا تھا کہ اگر حکومت کی جانب سے ود ہولڈنگ ٹیکس واپس نہ لیا گیا تو پھر 11 جولائی کو آٹے کی سپلائی بند کر دیں گے۔

عاصم رضا نے کہا کہ ایف بی آر کے ودہولڈنگ ٹیکس کولیکشن ایجنٹ نہیں بنیں گے، ٹیکس جمع کرنا حکومت کا کام ہے ہمارا نہیں۔ سینٹرل چیئرمین نے کہا کہ فلور ملز پہلے سے ٹیکس نیٹ میں ہیں اور ٹیکس دے رہی ہیں، ایف بی آر کے نئے ٹیکس سے عوام کیلئے آٹا مہنگا ہوگا، حکومت فوری طور پر ٹیکس واپس لے، ٹیکس واپس نہ ہوا تو 10 جولائی سے ملک بھر کی ملز بند ہو جائیں گی۔

انہوں نے کہا کہ آٹا عوام کی بنیادی خوراک ہے، اسے ٹیکس سے استثنی دیا جائے۔


متعلقہ خبریں