پاکستان اور بھارت کے درمیان قیدیوں کی فہرستوں کا تبادلہ

افغانستان: پاکستان اور بھارت کے درمیان ابتدائی بات چیت

پاکستان اور بھارت نے ایک دوسرے کی تحویل میں موجود قیدیوں کی فہرستوں کا تبادلہ کیا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ ممتاز زہرا بلوچ کے مطابق قیدیوں کی فہرستوں کا تبادلہ اسلام آباد اور نئی دہلی میں متعلقہ ہائی کمشنز کے ذریعے کیا گیا۔

انہوں نے بتایا کہ ہر سال یکم جنوری اور یکم جولائی کو ان فہرستوں کا ایک ساتھ تبادلہ کیا جاتا ہے۔

ترجمان کا بتانا تھا کہ پاکستانی جیلوں میں قید 254 بھارتی شہری قیدیوں اور ماہی گیروں کی فہرست بھارت کے حوالے کی جبکہ بھارت نے قید 452 پاکستانی یا مبینہ پاکستانی شہریوں اور ماہی گیروں کی فہرست فراہم کی۔

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق پاکستان نے لاپتا 38 پاکستانی دفاعی اہلکاروں کی فہرست بھی بھارتی حکام کو دی، ان اہلکاروں کے بارے میں خیال ہے کہ یہ 1965 اور 1971 کی جنگوں کے بعد سے بھارت کی تحویل میں ہیں۔

بھارتی ٹیم طوفان کے باعث بارباڈوس میں پھنس گئی، 2 جولائی کو واپسی متوقع

ترجمان نے بتایا کہ پاکستان نے سزا مکمل کرنے والے تمام پاکستانی قیدیوں کی فوری رہائی اور وطن واپسی کا مطالبہ کیا ہے اور جسمانی و ذہنی معذور قیدیوں تک خصوصی قونصلر رسائی کی درخواست کی ہے، بھارت سے ان کی قومی حیثیت کی فوری تصدیق کے لیے بھی درخواست کی گئی ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ ممتاز زہرا بلوچ نے کہا کہ بھارتی جیلوں میں قید تمام پاکستانیوں کی جلد واپسی یقینی بنانے کی کوششیں جاری رکھیں گے، رواں سال اب تک 4 پاکستانی قیدیوں کی وطن واپسی مکمل ہوچکی ہے۔


متعلقہ خبریں