غیرمعمولی بارشیں 2 لاکھ پاکستانیوں کو متاثر کریں گی، اقوام متحدہ کا انتباہ

Rain

اسلام آباد: اقوام متحدہ نے خبردار کیا ہے کہ پاکستان میں مون سون کی غیر معمولی بارشوں سے2 لاکھ پاکستانی متاثر ہوسکتے ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق اقوام متحدہ کے ایک اعلی عہدے دار نے خبردار کیا ہے کہ مون سون کے موسم میں غیرمعمولی بارشیں تقریباً 2 لاکھ پاکستانیوں کو متاثر کر سکتی ہیں۔

اقوام متحدہ کے نئے علاقائی کوآرڈینیٹر محمد یحیی نے اسلام آباد میں صحافیوں کو بتایا کہ پاکستان میں موسم سے متعلق پیش گوئیوں کے مطابق آئندہ ہفتوں میں غیرمعمولی بارشیں متوقع ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ نے مقامی حکام کے ساتھ مل کر ایک ہنگامی پلان بھی ترتیب دیا ہے۔ جس کے لیے 4 کروڑ ڈالر کی رقم بھی مختص کر دی گئی ہے۔

محمد یحییٰ نے کہا کہ اس مرتبہ 2022 جیسی شدید بارشیں تو نہیں ہوں گی۔ جن کے نتیجے میں سیلابی صورت حال پیدا ہو گئی تھی اور لگ بھگ ایک ہزار 739 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں حالیہ برسوں میں موسم کے پیٹرنز میں غیرمعمولی تبدیلیاں دیکھی گئی ہیں۔ لیکن ابھی تک رائے عامہ اور حکومتی عہدے داروں نے موسمیاتی تبدیلی کے منفی اثرات کی جانب بہت کم توجہ دی ہے۔

علاقائی کوآرڈینیٹر کے مطابق 2022 کے سیلاب نے پہلے سے شدید معاشی چیلنجز کے شکار ملک کو 3 ارب ڈالر سے زیادہ کا نقصان پہنچایا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: بالائی پنجاب میں آندھی اور گرج چمک کے ساتھ بارش کی پیشگوئی

محمد یحیی نے بتایا کہ وہ پاکستان کی وزارت موسمیاتی تبدیلی کے حکام کے ساتھ رابطے میں ہیں۔ جو جولائی سے اکتوبر کے دوران متوقع مون سون کی بارشوں کے حوالے سے ہنگامی پلان ترتیب دے رہے ہیں۔

اس سے قبل رواں ہفتے کے آغاز میں موسم کی پیش گوئی کرنے والے ماہرین نے پاکستانی شہریوں پر زور دیا تھا کہ وہ گھروں سے غیرضروری طور پر باہر نہ نکلیں۔ یہ مشورہ ہیٹ ویو کے پیش نظر دیا گیا تھا۔ جمعرات کو پاکستان کے کئی علاقوں میں درجہ حرارت 48 ڈگری سیلسیئس ریکارڈ کیا گیا۔


ٹیگز :
متعلقہ خبریں