پی ٹی آئی اور جے یو آئی پاکستان نے اتحاد کرلیا

پی ٹی آئی

جمعیت علماء اسلام پاکستان کے مرکزی رہنما شجاع الملک کی سربراہی میں وفد نے پی ٹی آئی رہنما اور اپوزیشن لیڈر عمر ایوب خان سے ملاقات کی۔

ملاقات میں دونوں جماعتوں نے اتحاد و شراکت کا باضابطہ اعلان کرتے ہوئے باہمی مشاورت سے سیاسی حکمت عملی مرتب کرنے پر مکمل اتفاق کیا۔

حج کے دنوں میں شدید گرمی ، عازمین حج کو ہدایات جاری

اس موقع پر عمر ایوب خان کا کہنا تھا کہ مولانا شیرانی کے سیاسی موقف کو ہمیشہ قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ہم نے مل کر اس ملک میں آئین کی بحالی کے لیے جدوجہد کرنی ہے۔

جمیعت اور تحریک انصاف کی آئین اور قانون کی پاسداری کے لیے سوچ مشترک ہے،ہمارے خلاف جھوٹے مقدمات آج بھی درج کیے جارہے ہیں۔

ہمارے لیڈر کے خلاف 200 سے زائد جھوٹے مقدمات درج کیے گئے۔تمام من گھڑت اور جھوٹے پروپیگنڈے کے باجود تحریک انصاف نے 8 فروری کو تاریخی فتح حاصل کی۔

متنازعہ ٹوئٹ کیس،بیرسٹر گوہر اور رؤف حسن کیخلاف تادیبی کارروائی سے روک دیا گیا

اسد قیصر نے وفد کو گرینڈ اپوزیشن الائنس کی سرگرمیوں کے بارے میں آگاہ کیا۔ اسد قیصر کا کہنا تھا کہ اس وقت ملک میں عملی طور پر مارشل لا نافذ ہے۔

شہباز شریف کا چائنہ میں ڈپٹی نائب میئر نے استقبال کیا۔ ہم ملک کو کہاں لے گئے ہیں ؟ چھوٹے صوبوں کو اعتماد میں لینا ہوگا ورنہ دوریاں بڑھ جائیں گی۔تحریک تحفظ آئین ملک میں آئین کی بالادستی چاہتی ہے۔

ہم ملک میں آئین کی بالادستی پر یقین رکھنے والی جماعتوں کو ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا کر رہے ہیں،تحریک انصاف روایتی سیاست سے بالاتر، اعلی سیاسی و سماجی مقاصد کے حصول کیلئے کوشاں ہے۔

نیٹ میٹرنگ پالیسی ختم کرنے سے متعلق زیرگردش خبروں کی تردید

مولانا شجاع الملک نے کہا کہ تحریک انصاف کے ساتھ ہمارا اتحاد ہے،اہلِ علم آگے بڑھیں اور قوم کی درست سمت میں رہنمائی کا فریضہ سرانجام دیں،دونوں جماعتوں کے مابین طے پانے والے معاملات کی کامیابی کیلئے دعاگو ہوں۔

ملاقات میں رکن قومی اسمبلی مولانا نسیم شاہ، رکن صوبائی اسمبلی آصف خان محسود اور مرکزی ڈپٹی سیکرٹری اطلاعات اخونزادہ حسین یوسفزئی بھی موجود تھے۔


ٹیگز :
متعلقہ خبریں