اسٹیٹ بینک نے ڈیجیٹل اکاؤنٹس کی لمٹ بڑھا کر 50 لاکھ روپے کر دی

اسٹیٹ بینک state bank

اسٹیٹ بینک نے ڈیجیٹل اکاؤنٹس کی لمٹ بڑھا کر 50 لاکھ روپے مقرر کر دی۔

ترجمان اسٹیٹ بینک کے مطابق اس اقدام کا مقصد مویشی منڈیوں میں ڈیجیٹل ادائیگیوں کو محفوظ اورآسان بنانا ہے۔

عید الاضحیٰ کے لیے قربانی کے جانوروں کی خریداری کے کیلئے مویشی منڈیوں میں ڈیجیٹل ادائیگیوں کی سہولت فراہم کرنے کے ضمن میں اسٹیٹ بینک نے 31 مئی سے 20 جون 2024 تک اکاؤنٹس کی مختلف کیٹیگریز کے لیے ٹرانزیکشن/بیلنس کی حدکو عارضی طور پر بڑھا دیا ہے۔

پنجاب پولیس کے ہیڈ کانسٹیبل نے دوران سروس پی ایچ ڈی کی ڈگری مکمل کر لی

ترجمان اسٹیٹ بینک کے مطابق اس اقدام کا مقصد ڈیجیٹل چینلز کو محفوظ اور آسان متبادل ادائیگی کے موڈ کے طور پر فروغ دے کر اس عرصے کے دوران ہونے والے اہم نقدی پر مبنی لین دین کے مسئلے کو حل کرنا ہے۔

جن اکاؤنٹس کے لیے حدیں بڑھا دی گئی ہیں ان میں برانچ لیس بینکنگ ایل ون، آسان اکاؤنٹ/ آسان ڈیجیٹل اکاؤنٹ اوروہ مرچنٹ اکاؤنٹس شامل ہیں جہاں زیادہ سے زیادہ بیلنس کی حد 5 ملین روپے ہے، شامل ہیں، علاوہ ازیں بائیومیٹرک تصدیق کے بعد کسانوں اوربیوپاریوں کیلئے معمول کی حد میں بھی استثنیٰ دیا گیاہے۔


متعلقہ خبریں