حماس آئی ایس آئی ایس کا دوسرا نام، اسرائیل کیساتھ ہیں، امریکی صدر


واشنگٹن: امریکی صدر جوبائیڈن نے اسرائیل کے ساتھ کھڑے ہونے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ حماس آئی ایس آئی ایس کا دوسرا نام ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق امریکی صدر جوبائیڈن اسرائیل کے دورے پر پہنچے جہاں اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو نے ان کا استقبال کیا۔ دونوں رہنماؤں نے باہمی ملاقات کے دوران غزہ کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا۔

یہ بھی پڑھیں: اسرائیل کا اپنے شہریوں کو ترکیہ چھوڑنے کی ہدایت

امریکی صدر نے کہا کہ اسرائیل آنے کا مقصد یہاں کے لوگوں کو تحفظ فراہم کرنا اولین ترجیح ہے اور ہم خاموشی سے نہیں بیٹھے رہ سکتے۔ حماس کے حملے میں 1300 سے زائد اسرائیلی شہری قتل ہوئے ہم۔ اسرائیل کے ساتھ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ حماس کے اسرائیل پر حملے سے بے حد افسوس ہوا، فلسطین اور اسرائیل کی صورتحال پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔ امریکی صدر نے ملاقات میں اسرائیل کو اسلحہ کی فراہمی اور خارجہ معاملات میں بھی مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

یہ بھی پڑھیں: امریکہ نے اسرائیل سے متعلق قرارداد کو ویٹو کر دیا

جو بائیڈن نے کہا کہ سارے فلسطینی حماس سے تعلق نہیں رکھتے اور حماس آئی ایس آئی ایس کا دوسرا نام ہے۔ دہشتگردی کے خاتمے تک جنگ جاری رہے گی۔


متعلقہ خبریں