میرے وہم و گمان میں بھی نہیں تھا کہ میں وزیر اعظم بنوں گا،انوارالحق کاکڑ

anwar ul haq kakar

نگران وزیراعظم انوار الحق کاکٹر نے کہا ہے کہ میرے وہم و گمان میں بھی نہیں تھا کہ میں وزیر اعظم بنوں گا۔ 

تفصیلات کے مطابق انوارالحق کاکڑ نے کہا  کہ ہر کسی کے حصے میں کوئی نہ کوئی ذمہ داری آتی ہے، مجھے دو یا تین دن پہلے شہباز شریف کی طرف سے رابطہ کیا گیا، میں نے اسلام آباد میں اپنی موجودگی کا بتایا ، مجھے ذہنی طور پر تیار رہنے کا بولا گیا،

الیکشن موخر ہونے پر احتجاج کیلئے چیئرمین پی ٹی آئی کیساتھ بھی کھڑے ہو سکتے ہیں ، عطاء تارڑ

انہوں نے کہا  کہ میرے قیام کا تعین آئین کرے گا، عہدے کی خوشی اپنی جگہ ہوتی ہے لیکن یہ ایک پریشر ہوتا ہے۔

آئین اور قانون کے مطابق الیکشن کمیشن عام انتخابات کااعلان کرے گا، الیکشن کمیشن جب الیکشن کروائے گا تب تک میں یہاں موجود ہوں،انتخابات کے حوالے سے جو بھی فیصلہ آئے گا نگران حکومت معاونت کرے گی۔

300 یونٹس استعمال کرنے والے بجلی صارفین کیلئے ریلیف پلان تیار

انکا کہنا تھا کہ نہیں چاہتے کوئی ایسااعلان کریں جو واپس لینا پڑے، صاحب ثروت سے ٹیکس لیکر پسماندہ طبقے پر خرچ ہونا چاہئے، بجلی کا ترسیلی نظام بہت سارے نقائص کا شکار ہے۔

وزیراعطم نے کہا ہے کہ انسان کو اپنی باطنی پوزیشن پر توجہ مرکوز رکھنی چاہیے، سمجھتا ہوں ہم ایک آئینی ترتیب کے ماتحت ہیں، میرے قیام کا تعین قوانین اور الیکشن کمیشن کا شیڈول کرے گا۔

میرا قیام الیکشن کمیشن کے الیکشن شیڈول کے پراسس سے جڑا ہوا ہے، لا آف لینڈ کہتا ہے کہ الیکشن کمیشن نے الیکشن کا فیصلہ کرنا ہے، اہمیت اسی قانون کی ہے جو لا آف دا لینڈ ہے۔

چیئرمین پی ٹی آئی لابیز کیلئے کام کر رہے ہیں، خواجہ آصف

نگران وزیر اعظم انوارالحق کاکڑکامزید کہنا تھا کہ ہم ان قوانین کی روشنی میں ہی اپنا طرز عمل کرنے کے مجاز ہیں، سپریم کورٹ جو بھی فیصلہ کرتی ہے ہمارے لیے قابل قبول ہے، ہم قوانین کی تشریحات نہیں کر سکتے۔


متعلقہ خبریں