راجن پور کے گائوں رسول پور میں شرح خواندگی 100 فیصد ، ہر کوئی افسر


پنجاب کے ضلع راجن پور کے ایک گائوں میں شرح خواندگی 100 فیصد اور جرائم کی شرح نہ ہونے کے برابر ہے۔

1933 میں قائم  گاؤں رسول پور کی آبادی 10 ہزار کے قریب ہے، یہاں کے بچے، بوڑھے نوجوان اور خواتین پڑھے لکھے ہیں، گاؤں میں کوئی بھی ان پڑھ نہیں، ہر دکان پر بھی گریجویٹ یا ایم اے شخص بیٹھا ہے، اکثر لوگ ڈاکٹر، پی ایچ ڈی، پائلٹ، انجینئر اور استاد سمیت دیگر اعلیٰ عہدوں پر فائزہیں۔

پنجاب میں شرح خواندگی، وزیر اعلیٰ کا علاقہ سب سے پیچھے

گائوں کے لوگ کھیتی باڑی بھی کرتے ہیں، ترقیاتی کام ہوں یا دیگر مسائل، یہ لوگ آپس میں مل کر طے کر لیتے ہیں، اس گاؤں میں آج تک کسی شخص پر کوئی ایف آئی آر درج نہیں ہوئی۔

لوگوں نے اپنی مدد آپ کے تحت گاؤں کو ماڈل بنا رکھا ہے، گاؤں کی صفائی کا خاص خیال رکھا جاتا ہے، گاؤں میں پان ، سگریٹ کی کوئی دکان نہیں۔

 


ٹیگز :
متعلقہ خبریں