یو اے ای سے پاکستان کو ایک ارب ڈالر موصول

اسحاق ڈار ishaq dar

وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ متحدہ عرب امارت نے اسٹیٹ بینک میں ایک ارب ڈالر جمع کرا دیئے ہیں، دو دن میں زرمبادلہ کے ذخائر میں تین ارب ڈالرز کا اضافہ ہوا ہے۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب میں انہوں نے کہا کہ گزشتہ روز سعودی عرب نے بھی دو ارب ڈالرز پاکستان کو دیئے تھے۔

پاکستان ڈیفالٹ کرسکتا ہے، بلوم برگ نے خبردار کردیا

انہوں نے کہا کہ پاکستان کے ڈیفالٹ ہونے کی قیاس آرائیاں اپنے آپ مر گئی ہیں۔

اسحاق ڈار نے کہا کہ 14جولائی کو زرمبادلہ کے اعدادوشمار جو جاری کئے جائیں گے ان کو ظاہر کیا جائے گا۔ وزیراعظم اور آرمی چیف کی جانب سے یواے ای قیادت کا مشکور ہوں، اسی طرح پاکستان کے عوام کی جانب سے بھی یواے ای حکومت کا مشکور ہوں۔

وزیر خزانہ  نے کہا کہ ہمارا ہدف وہی ہے کہ جولائی کے آخر تک زرمبادلہ کے ذخائر کو 15ارب ڈالر تک لے جائیں۔ شہبازشریف نے جب اقتدار سنبھالا تو زرمبادلہ کے ذخائر اتنے تو تھے لیکن 22اپریل سے لے کر اب تک بیرونی ادائیگیاں بھی کی ہیں،اور ان ادائیگیوں میں کوئی تاخیر بھی نہیں ہوئی۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان اللہ کے کرم سے ترقی کی راہ پر گامزن ہوچکا ہے، اب ہمارا ہر آنے والا دن بہتر ہے۔ میرا یمان ہے پاکستان اپنا کھویا ہوا مقام حاصل کرے گا، پاکستان 2016میں 24ویں معیشت بن چکا تھا، لیکن بدقسمتی سے 47ویں معیشت بن گیا، ایک امپورٹڈ اور سلیکٹڈ حکومت کو مسلط کیا جس کی وجہ سے تباہی ہوئی، اب پاکستان تمام نقصانات کو ریکور کررہا ہے۔

دوسری جانب  امریکی جریدے بلوم برگ نے کہا ہے کہ پاکستان کو مالی سال 2024 میں 23 ارب ڈالر کی ادائیگیاں کرنی ہیں جو اس کے زرمبادلہ کے ذخائر سے چھ گنا زیادہ ہیں۔

بلوم برگ نے اپنے رپورٹ میں کہا ہے کہ آئی ایم ایف کیساتھ  سٹاف لیول معاہدے سے پاکستان کا ڈالر بانڈ 27 فیصد بڑھا ، معاہدے کے بعد پاکستان کی فنڈنگ بہتر ہوئی۔

امریکی جریدے نے مزید کہا کہ پاکستان اپنے معاشی مسائل حل کرنے کی کوششیں کررہا ہے۔


متعلقہ خبریں