جسٹس فائز کا6رکنی بینچ سے متعلق تفصیلی نوٹ سپریم کورٹ کی ویب سائٹ سے ہٹادیا گیا

سپریم کورٹ supreme court

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کا6رکنی بینچ سے متعلق تفصیلی نوٹ سپریم کورٹ کی ویب سائٹ سے ہٹادیا گیا.

ہم نیوز کے مطابق جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کا تفصیلی نوٹ انگریزی اور اردو ترجمہ کیساتھ ویب سائٹ پر جاری کیا گیا تھا،جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کا تفصیلی نوٹ شائع ہونے کے کچھ دیربعد ویب سائٹ سے ہٹا یاگیا

یاد رہے اس سے قبل جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے ازخودنوٹس4/2022بارے نوٹ جاری کیا تھا۔

ہم نیوز کے مطابق نوٹ میں کہا گیا ہے کہ عشرت علی نے 4اپریل کو خود کو غلط طور پر رجسٹرارظاہرکیا،عشرت علی کو 3اپریل 2023کونوٹیفکیشن کے ذریعے وفاقی حکومت نے واپس بلایا،عشرت علی نے وفاقی حکومت کے حکم کی تعمیل سے انکار کیا،

عشرت علی نے 4 اپریل کو لارجر بینچ تشکیل کے روسٹر پر دستخط کیے ، میرے فیصلے پر 6رکنی بینچ کے تشکیل کی آئین و قانون میں اجازت نہیں تھی۔

6رکنی بینچ کے 4 اپریل کے فیصلے کی کوئی آئینی حیثیت نہیں ،3رکنی بینچ کے فیصلے پر 6رکنی بینچ کی تشکیل غلط تھی ، لارجر بینچ کو 4 اپریل کا آرڈر جاری کرنے کا اختیار نہیں تھا۔

تفصیلی نوٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ سپریم کورٹ کے 29 مارچ کے حکم کو 6 رکنی بینچ کالعدم نہیں کر سکتا تھا، 6ججز کا فیصلہ آئین کا متبادل نہیں ہو سکتا ،6ججز جلد بازی میں اکٹھے ہوئے ،6رکنی بینچ نے چند منٹ میں ازخود نوٹس کارروائی کو ختم کر دیا ۔


متعلقہ خبریں