مطالبات منظور، اساتذہ کا عمران خان کی رہائش گاہ کے باہر دھرنا ختم


خیبرپختونخوا کے اساتذہ نے مطالبات کی منظوری کے بعد بنی گالہ میں چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کی رہائش گاہ کے باہر دھرنا ختم کردیا۔

صدر ینگ ٹیچرز ایسوسی ایشن خیبرپختونخوا نے کہا ہے کہ ہمارے تمام مطالبات مان لیے گئے ہیں، تمام اساتذہ کو مبارک ہو،دھرنا یہاں ختم کر دیتے ہیں۔

خیال رہے کہ احتجاج کرنے والے اساتذہ کا مطالبہ ہے کہ صوبے کے 58 ہزار اساتذہ کو تاریخِ تقرری سے مستقل کیا جائے۔ تاریخ تقرری سے سنیارٹی اور سالانہ انکریمنٹ بھی دیا جائے۔

اس سے پہل اساتذہ نے بنی گالہ آنے والے پی ٹی آئی کے سینئر رہنما اسد عمر کی گاڑی روک لی تھی۔

نیوٹرلز کو کہا تھا، سازش کے تحت حکومت کو گرایا گیا تو سنبھالا نہیں جائے گا: عمران خان

احتجاجی ینگ ٹیچرز نے پی ٹی آئی کے مرکزی رہنما سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ ان کے مطالبات منظور کرانے میں تعاون کریں۔

سابق وفاقی وزیر اسد عمر نے اس موقع پر گاڑی سے نکل کر اساتذہ سے بات چیت کی اور کہا کہ آپ کا پیغام چیئرمین تحریک انصاف تک پہنچا دیتا ہوں لیکن آپ کو اس طرح دیکھ کر تکلیف اور خوشی دونوں محسوس ہو رہی ہے۔

اسد عمر نے کہا کہ تکلیف اس بات کی ہے کہ اساتذہ کا رشتہ احترام کا ہے، ہم اور ہمارے بچے اساتذہ کے پڑھائے ہوئے ہیں، اساتذہ کو یہاں آکر نہیں بیٹھنا چاہیے تھا۔

اساتذہ کم، دوست زیادہ، ایک ساتھ کھاتے پیتے، چینی اساتذہ بارے شاگردوں کے تاثرات

پی ٹی آئی کے مرکزی جنرل سیکریٹری اسد عمر نے کہا کہ خوشی اس بات کی ہے کہ اپنے حق کے لیے احتجاج کرنا چاہیے اور وہ آپ کر رہے ہیں، اساتذہ منظم ہیں اور اپنا دو ٹوک مؤقف بھی اپنائے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مجھے نہیں معلوم تھا کہ یہاں پر احتجاج چل رہا ہے۔


متعلقہ خبریں