یوٹیوب کے 10 کروڑ ڈالر کے پراجیکٹ میں مزید 30 ممالک شامل


یوٹیوب اپنی شارٹس ویڈیو کو ٹِک ٹاک کے برابر لانے کے لیے مزید 30 ممالک کے یوٹیوبر کے لیے دس کروڑ ڈالر کی مجموعی رقم فراہم کرے گا۔

یوٹیوب کے چیف پروڈکٹ آفیسر کے مطابق شارٹس فنڈ اب دنیا کے کئی ممالک کے لیے ہے جس کے تحت انفرادی چینل کو 100 سے دس ہزار ڈالر تک کی مدد کی جائے گی۔

ان یوٹیوبر سے کہا جائے گا کہ وہ ٹک ٹاک جیسی مختصرویڈیو بنائیں اور انہیں اپ لوڈ کریں۔جس سے کم عمر اور نوجوان ٹیلنٹ کو آگے لایا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں: یوٹیوب ویڈیوز کمپیوٹر پر ڈاؤن لوڈ کرنے کا فیچر

یوٹیوب کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ یوٹیوبر کو ماہانہ بنیادوں پر اضافی بونس رقم ادا کی جائے گی لیکن اس کا انحصار آپ کے ملک اور چینل کا فروغ شامل ہے۔

یوٹیوب ہر مہینے ان کئی ہزار تخلیق کاروں سے خود رابطہ کرے گا، جن کے شارٹس زیادہ مقبول ہوں گے اور انہیں ان کی کمائی ہوئی رقم کے بارے میں آگاہ کیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں: یوٹیوب نے 10 لاکھ ویڈیوز ہٹا دیں

تاہم 30 ممالک میں پاکستان شامل نہیں ہے، دیگر ممالک میں بھارت، الجیریا، ارجنٹینا، بحرین، چلی، کولمبیا، مصر، فن لینڈ، جرمنی، ہانک کانگ، عراق، اردن، کویت، لبنان، میکسکو، مراکش، نائیجیریا، ناروے، فلپائن، روس، پولینڈ، سعودی عرب، سنگاپور، سویڈن، جنوبی افریقہ، تائیوان، ترکی، برطانیہ اور ویت نام شامل ہیں۔

سب سے پہلے مختصر دورانئے کی ویڈیو بنانے کا ٹرینڈ ٹک ٹاک ایپ نے پیش کیا تھا، جس کے بعد فیس بک کی زیرِ ملکیت ایپ انسٹاگرام نے مختصر ویڈیوز بنانے کا فیچر ریلز’ کیا اور اسنیپ چیٹ نے ‘اسپاٹ لائٹ’ فیچر متعارف کرایا۔


متعلقہ خبریں