سنگاپور:کورونا کیسز کی گنتی روکنے کا فیصلہ


سنگاپورکی حکومت نے کورونا کیسز کی گنتی روکنے کا فیصلہ کر لیا ہے اور اب سے صرف ایسے مریضوں کا علاج کیا جائے گا جن کی حالت تشویشناک ہوگی۔

حکام کا کہنا ہے کہ کورونا پر قابو نہیں پایا جا سکتا ،اس کے ٹیسٹ کم سے کم کیے جائیں گے۔ کورونا ایک ایسی بیماری ہے جس پر قابو پانا آسان نہیں تاہم ہمیں زندگی میں آگے بڑھنا ہوگا۔ 

سنگاپور کے  وزیر برائے صحت نے کہا کہ اسپتالوں میں صرف ایسے مریضوں کا علاج کیا جائے گا جن کی حالت  تشویشناک ہو گی۔

معمولی نزلہ، بخار کے دوران لوگ اپنے روز مرہ کے کام نہیں چھوڑے گئے۔ دوسرے ممالک کی آمدو رفت کے لیے ویکسین پاسپوٹ اور باڈر ٹیسٹنک کیے جائے گے۔ باقی روز مرہ کے کام اپنی معمول کے مطابق ہوں گے۔

وزرا کا کہنا ہے کہ شدید متاثر افراد گھروں میں رہیں گے جن افراد کو کورونا ویکسینیشن کی ضرورت ہو گی انہیں اسپتال منتقل کیا جائے گا۔

حکام کا کہنا ہے کہ کورونا ٹیسٹ کم کرنے سے کیسز میں کمی آئے گی۔ وزرا کا کہنا ہے کہ دوسرے ممالک بھی اسی پالیسی اپنائیں۔ صرف ایسے مریضوں کا عکاج کیا جائے جن کی حالت تشویشناک ہو۔

سنگاپور کا شمار ان ممالک میں ہوتا ہے جہاں کورونا کے کیسز بہت کم رہے۔ اس سال سنگاپور میں 62 ہزار کورونا کیسز آئے جب کہ 36 اموات ہوئی۔

 


متعلقہ خبریں