اسلحے کا سب سے بڑا تاجر امریکہ

اسلحے کا سب سے بڑا تاجر امریکہ

فوٹو: فائل


سویڈن کے تحقیقی ادارے کے مطابق امریکہ دنیا میں اسلحے کا سب سے بڑا تاجر ہے۔ 

تحقیقی ادارے کا کہنا ہے کہ  پانچ برس کے دوران امریکہ کی برآمدات میں 37 فیصد تک اضافہ ہوا ہے۔ روس اور چین کی اسلحہ برآمدات میں کمی ہوئی۔

یہ بھی پڑھیں: امریکی ریاست پنسلوانیا میں اسلحہ کی فروخت میں ریکارڈ اضافہ

مشرق  وسطیٰ میں سب سے زیادہ اسلحہ خریدا جاتا ہے اور سعودی عرب خطے میں اسلحہ کا سب سے بڑا خریدار ہے۔

اسٹاک ہوم انٹرنیشنل پیس ریسرچ انسٹی ٹیوٹ کے مطابق اسلحہ کی عالمی منڈی میں امریکہ اب بھی سب سے بڑا تاجرہے۔ 

گذشتہ پانچ برس کے دوران اسلحہ کی عالمی منڈی میں امریکہ کی برآمدات میں 37 فیصد تک اضافہ ہوا۔

امریکی ہتھیاروں کی برآمدات کا 47 فیصد مشرق وسطی کے ممالک کو کیا گیا، سعودی عرب نے امریکی اسلحے کی کل برآمدات کا 24 فیصد اسلحہ خریدا۔ امریکہ اب 96 ریاستوں کو اسلحہ سپلائی کر رہا ہے۔

فرانس کے بڑے ہتھیاروں کی برآمدات میں 44 فیصد اضافہ ہوا جبکہ جرمنی کی برآمدات میں 21 فیصد اضافہ ہوا۔ اسرائیل اور جنوبی کوریا دونوں نے اپنی برآمدات میں نمایاں اضافہ کیا۔

سیپری کے مطابق مشرق وسطی میں گزشتہ پانچ برس کے مقابلے میں 25 فیصد اسلحہ زیادہ درآمد کیا گیا۔ سب سے زیادہ 61 فیصد اضافہ سعودی عرب کی درآمدات میں ہوا۔

یہ بھی پڑھیں: پینٹاگون اسلحہ ساز کمپنیوں کو نوازنے کیلئے جنگیں کراتا ہے، صدر ٹرمپ

مصر کی اسلحہ درآمدات میں 136 فیصد اور قطر کی درآمدات میں 361 فیصد اضافہ ہوا۔

روس سے اسلحے کی برآمد میں 22 فیصد کمی واقع ہوئی ہے۔ چین جو اسلحے کی برآمدات میں دنیا کا پانچواں سب سے بڑا ملک ہے، اس کی برآمدات میں 7.8 فیصد کمی آئی ہے۔


متعلقہ خبریں