امریکہ: مہاتما گاندھی کے مجسمے کو نامعلوم افراد نے توڑ ڈالا


بھارت کے بانی موہنداس کرم چند گاندھی کے امریکہ میں لگے مجسمے کو بعض نامعلوم افراد نے توڑ دیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق مہاتما گاندھی کے اس مجسمے کو اس کی بنیاد سے ہی اکھاڑ کر اسے نیچے پھینک دیا گیا۔

نامعلوم افراد نے مجسمے کو بنیاد سے ہی اکھاڑی کر نیچے گرادیا جبکہ مجسمے کا آدھا چہرہ بھی غائب تھا۔

رپورٹ کے مطابق تقریباً دو سو چورانوے کلوگرام وزنی یہ پیتل کا مجسمہ شمالی کیلیفورنیا کے شہر ڈیوس میں نصب تھا۔

گاندھی کی 150 ویں سالگرہ پر ان کی راکھ چوری

یاد رہے کہ دو سال قبل مہاتما گاندھی کی 150 ویں سالگرہ پر ان کی یادگار سے راکھ چرا لی گئی تھی۔

1948 میں انتہا پسند ہندو کے ہاتھوں قتل ہونے والے گاندھی کی باقیات سنٹرل انڈیا میں ان کی یادگار میں رکھی گئی تھی۔

چوروں نے گاندھی کی تصویر کی بے حرمتی بھی کی اوراس پر سبز پینٹ سے غدار لکھ ڈالا۔ بھارت میں انتہا پسند ہندو گاندھی سے ہندو مسلم دوستی کی وکالت کرنے پر شدید نفرت کرتے ہیں۔

مقامی پولیس کے اہلکار نے واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا تھا کہ یہ علاقے کے امن کو خراب کرنے کے لئے ایک گھناؤنی سازش رچی گئی ہے۔

یاد رہے جنوری 1948 کو آر ایس ایس سے تعلق رکھنے والے جنونی کارکن نے مہاتما گاندھی کو صرف اس لیے قتل کردیا تھا کہ انہوں نے پاکستان اور مسلمانوں کے غصب کیے جانے والے جائز حقوق نوزائیدہ مملکت کو دینے کے لیے آواز بلند کی تھی۔

ان پراس سے قبل بھی چار مرتبہ قاتلانہ حملے کیے گئے تھے جو ناکام رہے تھے۔


متعلقہ خبریں